پاکستان میں بغیر پاسپورٹ اور ویزے کے انٹری ختم کر دی جائے گی: خواجہ آصف

ایک اہم پالیسی تبدیلی میں، پاکستان پاسپورٹ اور ویزے کے بغیر داخلے کی اجازت کے دیرینہ رواج کو ختم کرنے کے لیے تیار ہے۔ وزیر دفاع خواجہ آصف نے اس فیصلے کا اعلان کرتے ہوئے ملک کو محفوظ بنانے اور سرحد پار غیر منظم نقل و حرکت سے پیدا ہونے والے خطرات سے نمٹنے کی فوری ضرورت پر زور دیا۔

خواجہ آصف نے اس اقدام کے پیچھے کیا وجہ بتائی۔ انہوں نے پاکستان اور افغانستان کے درمیان تاریخی اور مذہبی تعلقات پر روشنی ڈالی لیکن اس بات پر زور دیا کہ افغانستان سے امریکی افواج کے انخلاء کے بعد صورتحال یکسر بدل چکی ہے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ دہشت گردی میں بعد میں ہونے والے اضافے نے، جسے وہ زیادہ تر افغان سرزمین سے منسوب کرتے ہیں، نے پاکستان کے لیے اپنے سرحدی حفاظتی اقدامات کا از سر نو جائزہ لینا ضروری بنا دیا ہے۔

آصف نے کہا، “پوری دنیا رسمی سرحدوں کے ساتھ چلتی ہے جہاں پاسپورٹ کے ذریعے داخلہ کو منظم کیا جاتا ہے۔” انہوں نے افغانستان سے تیل، کھاد اور دیگر اشیا کی اسمگلنگ پر تشویش کا اظہار کیا جس سے پاکستان کی معیشت بری طرح متاثر ہو رہی ہے۔ ان چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے، پاکستان اپنی سرحدوں کو باقاعدہ بنانے کا ارادہ رکھتا ہے، اس بات کو یقینی بناتے ہوئے کہ آنے والی تمام ٹریفک کو درست پاسپورٹ اور ویزوں کے ساتھ مناسب چینلز کے ذریعے پروسیس کیا جائے۔

خواجہ آصف نے تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کی جانب سے درپیش جاری خطرے پر بھی بات کی۔ انہوں نے عندیہ دیا کہ اگر ضرورت پڑی تو ملک کی سالمیت کو یقینی بنانے کے لیے پاکستان سرحد پار ٹی ٹی پی کے اہداف کے خلاف کارروائی کر سکتا ہے۔ آصف نے پاکستان کی جانب سے بار بار امداد کی درخواستوں کے باوجود افغان حکومت کی جانب سے تعاون نہ ہونے پر مایوسی کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ افغانستان کے ساتھ سرحد کا انتظام اسی سختی سے کیا جانا چاہیے جس طرح پاکستان کی چین، ایران اور بھارت کے ساتھ سرحدیں ہیں۔

آصف نے ریمارکس دیے کہ “ہماری تعاون کی درخواستوں کو نظر انداز کر دیا گیا ہے، جو ہمیں یہ اقدامات کرنے پر مجبور کرتا ہے۔” انہوں نے سرحد کے دونوں طرف رہنے والے خاندانوں کی موجودگی کو نوٹ کرتے ہوئے صورتحال کی پیچیدگی کو تسلیم کیا۔ یہ منظر کشمیر اور سیالکوٹ اور ورکنگ باؤنڈری کے علاقوں میں منقسم خاندانوں کی یاد دلاتا ہے، جو برصغیر کی تقسیم کا نتیجہ تھا۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

زلفی بخاری پی ٹی آئی چیئرمین کے مشیر برائے بین الاقوامی امور مقرر

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب کی جانب سے جاری کردہ باضابطہ نوٹیفکیشن …