پاکستان میں سونے کی قیمتوں میں اضافہ، عالمی منڈیوں میں اسی طرح کے رجحان کا مشاہدہ

پاکستان میں سونے کی قیمت میں نمایاں اضافہ دیکھا گیا ہے، فی تولہ PKR 800 کے اضافے کے ساتھ۔ اس اضافے سے ایک تولہ سونے کی قیمت 240,800 روپے ہو گئی ہے۔ مزید برآں، 10 گرام سونے کی قیمت میں PKR 686 کا اضافہ ہوا ہے، جس کی قیمت اب PKR 206,447 ہو گئی ہے۔

یہ اضافہ عالمی رجحان کے مطابق ہے، کیونکہ بین الاقوامی مارکیٹ میں بھی سونے کی قیمتوں میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ سونے کی فی اونس قیمت میں 10 امریکی ڈالر کا اضافہ ہوا ہے جو 2,323 ڈالر تک پہنچ گیا ہے۔ پاکستان میں، یہ عالمی قیمت میں 20 امریکی ڈالر فی اونس کے اضافے کے مساوی ہے، جس کی قیمت اب 2,343 ڈالر فی اونس ہے۔

سونے کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ عالمی اقتصادی حالات، جغرافیائی سیاسی تناؤ اور مارکیٹ کی قیاس آرائیوں سمیت مختلف عوامل سے منسوب کیا جا سکتا ہے۔ اقتصادی غیر یقینی صورتحال کے دوران سونے کو اکثر ایک محفوظ پناہ گاہ کی سرمایہ کاری کے طور پر دیکھا جاتا ہے، جس کی وجہ سے طلب میں اضافہ ہوتا ہے اور اس کے نتیجے میں قیمتیں زیادہ ہوتی ہیں۔

سونے کی قیمتوں میں اضافے سے معیشت کے مختلف شعبوں بشمول زیورات، سرمایہ کاری اور تجارت پر اثر پڑنے کا امکان ہے۔ سونے کی اونچی قیمتیں زیورات اور صارفین کے لیے لاگت میں اضافے کا باعث بن سکتی ہیں، جو ممکنہ طور پر صارفین کے اخراجات اور مجموعی اقتصادی سرگرمیوں کو متاثر کر سکتی ہیں۔

سونے کی قیمتوں میں اضافے کے باوجود ماہرین کا خیال ہے کہ مارکیٹ غیر مستحکم اور غیر متوقع ہے۔ مرکزی بینک کی پالیسیاں، افراط زر کی شرح، اور جغرافیائی سیاسی پیش رفت جیسے عوامل آنے والے دنوں اور ہفتوں میں سونے کی قیمت کو متاثر کر سکتے ہیں۔

مجموعی طور پر، پاکستان اور عالمی سطح پر سونے کی قیمتوں میں اضافہ معاشی، سیاسی اور بازاری قوتوں کے پیچیدہ تعامل کی عکاسی کرتا ہے۔ چونکہ سرمایہ کار اور صارفین ان غیر یقینی اوقات میں تشریف لے جاتے ہیں، اس لیے امکان ہے کہ سونے کی قیمت مارکیٹ کے جذبات اور معاشی استحکام کا ایک اہم اشارہ بنی رہے گی۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

شاہ محمود قریشی پر 9 مئی کو آتش زنی کیس میں فرد جرم عائد

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی پر 9 مئی …