مولانا حکومتی اتحاد کے لیے فیملی کی طرح، پی ٹی آئی کے ساتھ اجنبی نظر آئیں گے: یوسف گیلانی

سینیٹ کے چیئرمین یوسف رضا گیلانی نے جے یو آئی (ف) کے رہنما مولانا فضل الرحمان کو حکومتی اتحاد کے تناظر میں خاندانی فرد قرار دیا ہے لیکن نوٹ کیا ہے کہ وہ پی ٹی آئی کے ساتھ باہر کے طور پر دکھائی دیں گے۔

ملتان میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے گیلانی نے مخلوط حکومت میں مولانا فضل الرحمان کے ساتھ خاندانی تعلقات پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان حکومتی اتحاد کے لیے ایک فیملی ممبر کی طرح ہیں، جب وہ یہاں آتے ہیں تو ایک فیملی ممبر کی طرح محسوس کرتے ہیں، ہم انہیں ملتان کا حصہ سمجھتے ہیں، وہ ہمارے دوست ہیں۔

گیلانی کے ریمارکس حکمران اتحاد کے اندر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) اور جمعیت علمائے اسلام-فضل (جے یو آئی-ایف) کے درمیان قریبی تعلقات کو اجاگر کرتے ہیں۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ جب کہ پیپلز پارٹی کو پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل-این) سے تحفظات ہیں، لیکن یہ صرف تحریری معاہدے پر عمل درآمد پر مبنی ہیں۔ گیلانی نے مزید کہا کہ ‘پی پی پی کی مسلم لیگ (ن) کے ساتھ واحد تشویش یہ ہے کہ تحریری معاہدے کا احترام کیا جائے۔ بلاول بھٹو بھی چاہتے ہیں کہ حکومت سازی کے وقت کیے گئے تحریری معاہدے پر عمل کیا جائے۔’

ملاقات کے دوران گیلانی نے آئندہ بجٹ کے حوالے سے سوالات بھی کیے اور عوام کو مہنگائی سے ریلیف دینے کی خواہش کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم بجٹ میں ضرورت مندوں کو ریلیف دینا چاہتے ہیں، ہماری کوشش ہے کہ مہنگائی سے متاثرہ لوگوں کو ریلیف دیا جائے۔

مزید برآں، گیلانی نے مخیر حضرات سے اپیل کی کہ وہ پسماندہ افراد کا خیال رکھیں، ان پر زور دیا کہ وہ ضرورت مندوں کی مدد کریں۔ انہوں نے کہا کہ میں مخیر حضرات سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ غریبوں اور ضرورت مندوں کا خیال رکھیں۔

مزید تناظر میں یہ بات قابل ذکر ہے کہ وزیراعظم شہباز شریف حال ہی میں مولانا فضل الرحمان کو مطمئن کرنے کی کوشش میں ان کی رہائش گاہ پر گئے۔ یہ دورہ اتحادی حکومت کے اندر مولانا فضل الرحمان کی حمایت کی اہمیت کو واضح کرتا ہے۔ مزید برآں، پی ٹی آئی کے ساتھ جاری بات چیت کے باوجود، مولانا فضل الرحمان نے اپنے ترجمان کے ذریعے یہ بات برقرار رکھی ہے کہ انہوں نے عمران خان کو کبھی بھی “یہودی ایجنٹ” نہیں کہا، یہ محض ایک سیاسی نعرہ ہے۔

گیلانی کے ریمارکس پاکستان کے سیاسی اتحادوں، خاص طور پر پی پی پی، مسلم لیگ (ن) اور جے یو آئی-ایف کے درمیان پیچیدہ حرکیات اور پی ٹی آئی کے بارے میں ان کے اجتماعی موقف کی نشاندہی کرتے ہیں۔ تحریری معاہدوں پر عمل کرنے کا مطالبہ اتحادی حکومت کے اندر استحکام اور تعاون کو یقینی بنانے کے لیے جاری کوششوں کی عکاسی کرتا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

شاہ محمود قریشی پر 9 مئی کو آتش زنی کیس میں فرد جرم عائد

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی پر 9 مئی …