سابق صدر عارف علوی کو پارٹی رہنما کی اسپتال میں عیادت کی اجازت دینے سے انکار

سابق صدر پاکستان اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما عارف علوی کو اس وقت دھچکا لگا جب پولیس نے انہیں سروسز اسپتال میں پارٹی کے ساتھی رہنمامیاں محمود الرشید کی عیادت کی اجازت نہ دی۔ یہ واقعہ اس وقت سامنے آیا جب علوی محمود الرشید کی صحت کی جانچ کے لیے ہسپتال پہنچے، صرف قانون نافذ کرنے والے حکام کی جانب سے انہیں بتایا گیا کہ پیشگی اجازت کے بغیر اس طرح کا دورہ ممکن نہیں تھا۔

عارف علوی کا محمود الرشید سے ملنے کا ارادہ ان کی پارٹی کے ساتھی، جو اس وقت عدالتی حراست میں ہے، کی خیریت کے لیے ان کی فکر میں جڑا تھا۔ تاہم پولیس اپنے موقف پر ڈٹی رہی، اور وضاحت کی کہ عدالتی حراست میں کسی سے ملاقات کے لیے متعلقہ حکام سے واضح اجازت درکار ہوتی ہے۔ اس طریقہ کار کی ضرورت نے علوی کو اپنی سرتوڑ کوششوں کے باوجود محمود الرشید کو دیکھنے کے قابل نہیں چھوڑا۔

پولیس کے ساتھ تبادلے کے دوران عارف علوی نے اپنے متوقع دورے کے اخلاقی مضمرات پر روشنی ڈالی۔ اس نے دلیل دی کہ اخلاقی طور پر، اسے اپنے ساتھی سے ملنے کی اجازت ہونی چاہیے۔ علوی نے کہا، “اس دورے کی اجازت دینا اخلاقی طور پر جائز ہے۔ اگر آپ اس میں سہولت فراہم کرتے ہیں، تو میں شکر گزار ہوں گا، لیکن مجھے پنجاب پولیس سے کسی احسان کی امید نہیں ہے،” علوی نے کہا۔ ان کے ریمارکس نے پی ٹی آئی کے اندر ایک وسیع تر جذبات کو اجاگر کیا، جو بیوروکریٹک رکاوٹوں سے پارٹی کی مایوسی کی عکاسی کرتے ہیں جو اکثر ان کی سرگرمیوں کو پیچیدہ بنا دیتے ہیں۔

علوی نے پی ٹی آئی کے لیے محمود الرشید کی اہمیت پر زور دینے کا موقع بھی لیا۔ انہوں نے محمود الرشید کو پارٹی کا ایک اہم اثاثہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ پوری پی ٹی آئی اس مشکل دور میں ان کے ساتھ یکجہتی کے ساتھ کھڑی ہے۔ “محمود الرشید پی ٹی آئی کا اثاثہ ہیں، اور پوری پارٹی اس مشکل وقت میں ان کے ساتھ کھڑی ہے،” علوی نے پارٹی صفوں میں اتحاد اور حمایت کا مظاہرہ کرتے ہوئے تبصرہ کیا۔

سروسز ہسپتال میں پیش آنے والا واقعہ پاکستان کے وسیع تر سیاسی ماحول کا عکاس ہے، جہاں پی ٹی آئی کے رہنما اور اراکین اکثر پیچیدہ قانونی اور انتظامی منظر نامے پر تشریف لے جاتے ہیں۔ علوی کے دورے کی اجازت دینے سے انکار عدالتی تحویل سے متعلق سخت اقدامات اور سیاسی شخصیات کو ایسے حالات میں اعلیٰ سطح کی جانچ پڑتال کی نشاندہی کرتا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

شاہ محمود قریشی پر 9 مئی کو آتش زنی کیس میں فرد جرم عائد

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی پر 9 مئی …