برازیل میں بارشوں نے تباہی مچادی 29 افراد ہلاک

برازیل میں طوفانی بارش میں کم از کم 29 افراد ہلاک اور 60 سے زائد لاپتہ ہیں۔ سیلاب نے بڑے پیمانے پر افراتفری اور نقل مکانی کو جنم دیا ہے، اس کے نتیجے میں 10,000 سے زیادہ لوگ بے گھر ہوگئے ہیں۔

مسلسل بارش نے زمین کی تزئین کو تبدیل کر دیا ہے، گلیوں کو آبی گزرگاہوں میں تبدیل کر دیا ہے اور پورے خطے میں دریاؤں اور جھیلوں میں پانی کی سطح میں اضافہ ہو رہا ہے۔ تباہ کن سیلاب نے گھروں، کاروباروں اور پوری برادریوں کو غرق کر دیا ہے، جس سے اس کے راستے میں تباہی کا راستہ باقی ہے۔

شدید بارشوں کا اثر ایک ڈیم کے ٹوٹنے سے مزید بڑھ گیا ہے، جس سے 300,000 سے زائد رہائشیوں کو بجلی کی فراہمی منقطع ہو گئی ہے۔ ڈیم کے ٹوٹنے سے واقعات کا ایک بڑا سلسلہ شروع ہو گیا ہے، جس نے تباہی سے متاثرہ افراد کو درپیش چیلنجوں کو مزید بڑھا دیا ہے۔

طوفانی بارشوں نے بنیادی ڈھانچے کو بھی نقصان پہنچایا ہے، سیلابی پانی کی وجہ سے کئی پل منہدم ہو گئے ہیں۔ سڑکیں بہہ گئی ہیں، ٹرانسپورٹ کے اہم راستوں کو منقطع کر دیا گیا ہے اور کمیونٹیز کو ضروری خدمات اور سامان سے الگ کر دیا گیا ہے۔

حکام نے موجودہ صورتحال کو بے مثال تناسب کی تباہی قرار دیتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ بدترین صورتحال ابھی باقی ہے۔ جاری بارشوں نے مزید سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ کا خدشہ پیدا کر دیا ہے، جو متاثرہ علاقوں میں پہلے سے موجود سنگین حالات کو مزید بڑھا سکتا ہے۔

ریسکیو اور ریلیف کی کوششیں جاری ہیں، ہنگامی خدمات انتھک محنت سے کام کر رہی ہیں تاکہ متاثرین کو باہر نکالا جا سکے اور ضرورت مندوں کو مدد فراہم کی جا سکے۔ تاہم، آفت کے پیمانے نے وسائل کو حد تک بڑھا دیا ہے، جس سے تمام متاثرہ افراد تک بروقت پہنچنا مشکل ہو گیا ہے۔

برازیل کی حکومت نے بحران سے نمٹنے کے لیے اپنے وسائل کو متحرک کیا ہے، متاثرہ علاقوں میں اہلکاروں اور آلات کو تعینات کیا ہے۔ تاہم، تباہی کی سراسر شدت نے مقامی صلاحیت کو مغلوب کر دیا ہے، جو جاری امدادی کوششوں میں مدد کے لیے بین الاقوامی امداد کی ضرورت کو اجاگر کرتا ہے۔

بارشوں کا سلسلہ جاری ہے اور پانی بڑھ رہا ہے، برازیل کے لوگ مزید تباہی کے امکان کے لیے خود کو تیار کر رہے ہیں۔ متاثرہ کمیونٹیز کی لچک اور طاقت کا امتحان آنے والے دنوں اور ہفتوں میں کیا جائے گا کیونکہ وہ اس تباہ کن واقعے کے بعد اپنی زندگیوں کی تعمیر نو کے لیے کام کر رہے ہیں۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

امریکی رکن کانگریس نے کملا ہیرس کے خلاف مواخذے کی دستاویزات جمع کرائیں

امریکی رکن کانگریس اینڈی اوگلس نے باضابطہ طور پر نائب صدر کملا ہیرس کے مواخذے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *