سری لنکن ائیرلائن کی پرواز پر چوہا سوار ہونے کی وجہ سے تین دن کے لیے تاخیر کا شکار

سری لنکن ایئر لائنز کی پرواز کو حال ہی میں اس وقت ایک غیر معمولی اور طویل تاخیر کا سامنا کرنا پڑا جب جہاز میں ایک چوہا پایا گیا، جس سے طیارے کو تین دن کے لیے گراؤنڈ کرنا پڑا۔ یہ واقعہ، جو گزشتہ ہفتے پیش آیا، مسافروں کے لیے ایک اہم خلل کا باعث بنا اور ہوائی جہاز کی حفاظت اور صفائی کو یقینی بنانے میں درپیش چیلنجز کو اجاگر کیا۔

چوہا پہلی بار سری لنکن ایئر لائنز کے ایئربس اے 330 میں سوار پاکستان کے شہر لاہور سے پرواز کے دوران دیکھا گیا تھا۔ چوہے کی موجودگی نے پرواز کی حفاظت کے بارے میں فوری خدشات پیدا کیے، کیونکہ چوہے ممکنہ طور پر ہوائی جہاز کے اہم آلات اور نظام کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ معیاری پروٹوکول کے بعد، عملے نے چوہے کو تلاش کرنے اور اس سے ہونے والے کسی بھی ممکنہ نقصان کا اندازہ لگانے کے لیے مکمل تلاش شروع کی۔

چوہے کی تلاش مشکل ثابت ہوئی، کیونکہ وہ ہوائی جہاز کی حدود میں کھوج سے بچنے میں کامیاب ہو گیا تھا۔ عملے کے ارکان اور زمینی عملے نے ہوائی جہاز کے ذریعے ہوشیاری سے کنگھی کی، چوہے کی وجہ سے ہونے والے نقصان یا پریشانی کے کسی بھی نشان کی جانچ کی۔ اس عمل میں وائرنگ، موصلیت اور دیگر اجزاء کا معائنہ کرنا شامل تھا جن تک چوہا تک رسائی حاصل کی جا سکتی تھی۔

جیسا کہ تلاش جاری تھی، کولمبو، سری لنکا میں طیارے کو گراؤنڈ کرنے کا فیصلہ کیا گیا، جب تک کہ چوہے کو تلاش نہیں کیا جا سکتا. یہ فیصلہ ہلکے سے نہیں لیا گیا، کیونکہ طیارہ کو طویل مدت کے لیے گراؤنڈ کرنے سے ایئر لائن کے لیے اہم مالی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ پرواز کی منسوخی کی لاگت، مسافروں کی تکلیف، اور متاثرہ مسافروں کو ایڈجسٹ کرنے کی ضرورت یہ سب اس طرح کے واقعات کے مالی بوجھ میں حصہ ڈالتے ہیں۔

تین دن کی سخت تلاش کے بعد بالآخر چوہا دریافت ہوا، بدقسمتی سے پہلے ہی مر چکا تھا۔ چوہے کو ہٹانے کے بعد، طیارے کو پرواز کے لیے محفوظ سمجھا گیا، اور آپریشن دوبارہ شروع ہو گیا۔ یہ واقعہ ایئر لائنز کو اپنے ہوائی جہاز کی صفائی اور حفاظت کو برقرار رکھنے میں درپیش چیلنجوں کی یاد دہانی کے طور پر کام کرتا ہے، خاص طور پر ایسے ماحول میں جہاں کیڑوں جیسے چوہوں تک رسائی حاصل ہو سکتی ہے۔

اس واقعے کے ردعمل میں سری لنکن ایئر لائنز نے مسافروں کی حفاظت کے لیے اپنے عزم کا اعادہ کیا اور کہا کہ مستقبل میں ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے اقدامات کیے جائیں گے۔ اس میں کیڑوں پر قابو پانے کے بہتر اقدامات اور ہوائی جہاز کے زیادہ بار بار معائنہ شامل ہو سکتے ہیں تاکہ کسی بھی ممکنہ مسائل کا فوری طور پر پتہ لگایا جا سکے۔

اس واقعے نے اہم خلل اور مالی نقصان پہنچایا، یہ ہوائی سفر کی حفاظت اور آرام کو یقینی بنانے کے لیے چوکسی اور مکمل دیکھ بھال کے طریقہ کار کی اہمیت کو بھی واضح کرتا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سعودی بادشاہ کی صحت بگڑ گئی، ولی عہد نے دورہ جاپان ملتوی کردیا

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے شاہ سلمان کی بگڑتی ہوئی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *