گوادر میں 186 ملی میٹر بارش ریکارڈ

بلوچستان، پاکستان کے ایک بندرگاہی شہر گوادر میں گزشتہ دو دنوں کے دوران 183 ملی میٹر بارش ہوئی، آنے والے دنوں میں مزید بارشوں کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ شدید بارش کی وجہ مغربی ہواؤں کے نظام کو قرار دیا گیا، جس کی وجہ سے خطے میں بڑے پیمانے پر بارش ہوئی، جس سے کئی علاقوں میں سیلاب آ گیا۔ خاص طور پر گوادر میں 16 گھنٹے سے مسلسل بارش ہوئی جس کے نتیجے میں متعدد علاقے زیر آب آ گئے۔

موسلا دھار بارش نے کافی نقصان پہنچایا ہے، گھروں، دکانوں، بازاروں، محلوں اور سڑکوں میں پانی بھر گیا ہے۔ جیوانی میں، مسلسل بارش کے باعث تین بند پھٹ گئے، جس سے علاقے میں ندی نالوں میں طغیانی آنے سے سرداربندر سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ مزید برآں زیارت، طوبہ اچکزئی، طوبہ کاکڑی اور کوجک ٹاپ میں شدید برفباری ہوئی۔

صورتحال کے جواب میں پاک فوج نے گوادر اور جیوانی میں امدادی کارروائیاں شروع کر دی ہیں، اب تک کامیابی سے پانچ افراد کو نکال لیا گیا ہے۔ آرمی انجینئرز روڈ کلیئرنس اور گاڑیوں کی بازیابی کے کاموں پر بھی کام کر رہے ہیں۔ ادھر بازاروں اور گھروں سے پانی نکالنے کے لیے ڈی واٹرنگ آپریشن جاری ہے۔

شدید بارش کے باعث گوادر میں بجلی کی فراہمی میں خلل پڑا ہے اور کئی علاقوں میں موبائل نیٹ ورک بھی منقطع ہیں۔ نتیجتاً، مکینوں کو چیلنجز کا سامنا ہے اور ضروری خدمات کی عدم موجودگی کی وجہ سے انتہائی نازک حالات میں رات گزارنے پر مجبور ہیں۔

چیف میٹرولوجسٹ سردار سرفراز نے جیو نیوز کے پروگرام جیو پاکستان میں بات کرتے ہوئے بتایا کہ موسم کا نیا نظام ملک بھر میں شدید بارشوں کا باعث بن رہا ہے جو کہ سال کے اس وقت کے لیے غیر معمولی ہے۔ انہوں نے روشنی ڈالی کہ گوادر میں ان مہینوں میں اس سے پہلے اتنی شدید بارشیں نہیں ہوئیں اور کل ایک اور موسلادھار بارش کا امکان ہے۔

سرفراز نے جنوری اور فروری میں پہاڑوں پر برف باری کے مختصر دورانیے کے بارے میں بھی خبردار کیا، جو کے پی کے کے کچھ علاقوں میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ کے خطرے کی نشاندہی کرتا ہے۔ توقع ہے کہ کل سے یکم مارچ تک گوادر اور بلوچستان کے دیگر شہروں میں مزید بارش کا امکان ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

مسلم لیگ ن کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس: شہباز شریف قائم مقام پارٹی صدر مقرر

پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کے اندر ایک اہم پیش رفت میں، …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *