وزیر اعلٰی بلوچستان کے دورے پہ خود کو ڈاکٹر ظاہر کرنے والے میل نرس کا مقدمہ درج

کوئٹہ بلوچستان میڈیکل کمپلیکس کی ایک نرس محمد قاسم نے خود کو ایک قانونی تنازعہ کا مرکز پایا ہے۔ وزیراعلیٰ بلوچستان سردار ثناء اللہ زہری کے حالیہ دورے کے دوران قاسم نے مبینہ طور پر ایک ڈاکٹر کی نقالی کی اور وزیراعلیٰ کو بریفنگ دی۔ اس کارروائی کے نتیجے میں قاسم کے خلاف نقالی اور غلط معلومات فراہم کرنے کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

یہ واقعہ 13 مارچ کی رات کو پیش آیا، جب وزیر اعلیٰ نے اسپتال کا دورہ کیا۔ قاسم نے ایک ڈاکٹر ظاہر کرتے ہوئے مبینہ طور پر وزیر اعلیٰ سے اپنا تعارف ڈاکٹر زاہد کے طور پر کرایا اور میڈیکل کمپلیکس کے بارے میں بریفنگ دینے کے لیے آگے بڑھا۔ مزید برآں، قاسم نے مبینہ طور پر وزیراعلیٰ کو مختلف طبی امور پر بریفنگ دی، گویا وہ ایک قابل طبی پیشہ ور ہیں۔

وزیر اعلیٰ نے دھوکہ دہی کا پتہ چلنے پر حکام کو قاسم کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کی ہدایت کی۔ اس کے خلاف مقامی تھانے میں مقدمہ درج کر لیا گیا ہے، اور معاملے کی تفتیش بلوچستان میڈیکل کمپلیکس کے انتظامی افسر کر رہے ہیں۔

یہ واقعہ بلوچستان میں طبی سہولیات کی سلامتی اور سالمیت کے بارے میں سنگین خدشات کو جنم دیتا ہے۔ یہ طبی پیشہ ور افراد کی نقالی کرنے والے افراد کی طرف سے لاحق ممکنہ خطرات اور مستقبل میں ایسے واقعات کو روکنے کے لیے سخت اقدامات کی ضرورت پر روشنی ڈالتا ہے۔

ڈاکٹر کی نقالی کرنا نہ صرف طبی اداروں کے اعتماد اور اعتبار کو مجروح کرتا ہے بلکہ مریضوں کو بھی خطرے میں ڈالتا ہے۔ مریض اہل اور لائسنس یافتہ طبی پیشہ ور افراد سے دیکھ بھال کی توقع رکھتے ہیں، اور اس اعتماد کی کسی بھی خلاف ورزی کے سنگین نتائج ہو سکتے ہیں۔

حکام کے لیے ضروری ہے کہ وہ اس واقعے کی مکمل تحقیقات کریں اور ذمہ داروں کے خلاف مناسب کارروائی کریں۔ اس میں نہ صرف وہ فرد شامل ہے جس نے ڈاکٹر کی نقالی کی ہے بلکہ کوئی بھی دوسرے لوگ بھی شامل ہیں جو دھوکہ دہی میں ملوث یا واقف ہو سکتے ہیں۔

مزید برآں، یہ واقعہ طبی سہولیات میں سخت حفاظتی اقدامات کے نفاذ کی اہمیت کو واضح کرتا ہے۔ ہسپتالوں اور کلینکوں کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ صرف مجاز اہلکاروں کو ہی حساس علاقوں تک رسائی حاصل ہو اور طبی عملے کی اسناد کی تصدیق کے لیے مناسب تصدیقی طریقہ کار موجود ہو۔

آخر میں، محمد قاسم کا کیس طبی پیشہ ور افراد کی نقالی کرنے کے خطرات اور صحت کی دیکھ بھال کی ترتیبات میں زیادہ چوکسی کی ضرورت پر روشنی ڈالتا ہے۔ یہ طبی اداروں کی سالمیت کو برقرار رکھنے اور اس بات کو یقینی بنانے کی اہمیت کی یاد دہانی کے طور پر کام کرتا ہے کہ مریضوں کو اہل پیشہ ور افراد سے دیکھ بھال حاصل ہو

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

زلفی بخاری پی ٹی آئی چیئرمین کے مشیر برائے بین الاقوامی امور مقرر

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب کی جانب سے جاری کردہ باضابطہ نوٹیفکیشن …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *