خواتین کے عالمی دن پہ مرحومہ بینظیر بھٹو کو خراج تحسین پیش کرنے کی قرارداد منظور

خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پاکستان کی قومی اسمبلی نے ملک کی پہلی خاتون وزیر اعظم مرحومہ بے نظیر بھٹو کو خراج عقیدت پیش کرنے کا ایک اہم فیصلہ کیا۔ پاکستان اور عالمی اسلامی برادری دونوں کی نمائندگی کرنے والی اسمبلی نے ان کی بے مثال خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے ایک قرارداد کی منظوری دی۔

شیری رحمان کی طرف سے پیش کی گئی قرارداد میں خواتین کے حقوق اور صنفی مساوات کے فروغ کی اہمیت پر زور دیا گیا ہے۔ یہ بے نظیر بھٹو کی میراث کی عکاسی کرتا ہے، جنہوں نے نہ صرف پاکستان بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی لیڈر بننے کے لیے بے شمار رکاوٹیں توڑیں۔

تاہم سنی اتحاد کونسل نے اسمبلی اجلاس کے دوران اس قرارداد کی مخالفت کی۔ یہ اپوزیشن پاکستان میں صنفی مساوات اور خواتین کے حقوق سے متعلق جاری چیلنجز اور مباحثوں کو اجاگر کرتی ہے۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) پارٹی کے ایک اہم رہنما عمر ایوب نے پی ٹی آئی کی خواتین ارکان کے ساتھ حکومتی سلوک کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے دلیل دی کہ ان خواتین کو غیر منصفانہ طور پر ان کے گھروں تک محدود رکھا جا رہا ہے، یہ دعویٰ پاکستانی معاشرے میں خواتین کی حیثیت کے بارے میں وسیع تر خدشات کو واضح کرتا ہے۔

اس کے جواب میں ایوب نے ایک متبادل قرارداد پیش کی جس کا مقصد پی ٹی آئی کی خواتین ارکان کے خلاف ہونے والے مبینہ ظلم کو دور کرنا تھا۔ یہ اقدام پاکستان کے اندر ایک وسیع تر سیاسی جدوجہد کی نشاندہی کرتا ہے، جہاں مختلف جماعتیں اور دھڑے اثر و رسوخ اور طاقت کے حصول کے لیے لڑتے ہیں، اکثر صنفی مساوات سے متعلق مسائل کو میدان جنگ کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔

قومی اسمبلی کے سپیکر نے بے نظیر بھٹو کے اعزاز میں قرارداد کی مخالفت پر مایوسی کا اظہار کیا۔ انہوں نے خواتین رہنماؤں کی کامیابیوں کو تسلیم کرنے اور منانے کی اہمیت پر زور دیا، خاص طور پر بے نظیر بھٹو جیسی مشہور شخصیت۔

مزید برآں، قومی اسمبلی کے ایک اور رکن ایاز صادق نے پارلیمنٹ کے اندر سجاوٹ کو برقرار رکھنے کی ضرورت پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے اراکین کو یاد دلایا کہ سوشل میڈیا کے مقاصد کے لیے قومی اسمبلی کے اندر فلم بنانا ممنوع ہے، جو پارلیمانی قوانین اور روایات کو برقرار رکھنے کی اہمیت پر زور دیتا ہے۔

صادق نے اس حوالے سے ایک مسئلہ بھی اٹھایا، یہ نوٹ کرتے ہوئے کہ ایک رکن کو پارلیمنٹ کے اندر سگریٹ پیتے دیکھا گیا، جو کہ قواعد کے خلاف ہے۔ یہ واقعہ تمام اراکین کے لیے اعلیٰ ترین معیارات پر عمل پیرا ہونے اور پارلیمانی اصولوں کے احترام کی ضرورت کی یاد دہانی کا کام کرتا ہے۔

مجموعی طور پر، قومی اسمبلی میں ہونے والے واقعات سیاسی حرکیات، صنفی مسائل اور پارلیمانی سجاوٹ کے پیچیدہ تعامل کی عکاسی کرتے ہیں، جو پاکستانی معاشرے کے اندر جاری چیلنجوں اور مباحثوں کو اجاگر کرتے ہیں۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

اسلام آباد ہائی کورٹ نے توہین عدالت کیس میں فواد چوہدری کا جیل ٹرائل کالعدم قرار دے دیا

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کے حق میں فیصلہ سناتے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *