ایک سروے کے مطابق 74% نوجوان فوج کو ملک کا با اعتماد ادرہ سمھجتے ہیں

معروف مارکیٹ ریسرچ ایجنسی ‘اوپسوس’ کی جانب سے امریکی میڈیا آؤٹ لیٹ وائس آف امریکہ کے تعاون سے کیے گئے ایک حالیہ سروے میں پاکستانی نوجوانوں نے ملک کی مسلح افواج پر زبردست اعتماد کا اظہار کیا۔ 3 جنوری سے 12 جنوری تک ہونے والے اس سروے میں 18 سے 34 سال کی عمر کے افراد کو نشانہ بنایا گیا۔

نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ پاکستانی نوجوانوں کا ایک قابل ذکر 74 فیصد فوج کو ملک کا سب سے قابل اعتماد ادارہ سمجھتے ہیں۔ سپریم کورٹ نے قریب سے پیروی کی جس میں 58 فیصد نے مکمل اعتماد کا اظہار کیا، جبکہ 54 فیصد نے میڈیا پر اعتماد کیا۔ سیاسی جماعتوں نے 50% اعتماد کی شرح حاصل کی، اور پارلیمنٹ اور وفاقی حکومت دونوں کو 47% ملا۔ 42% جواب دہندگان نے مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کو قدرے نیچے رکھا۔

مزید برآں، سروے میں انتخابات میں بیرونی مداخلت کے بارے میں تاثرات کا پتہ لگایا گیا۔ ایک قابل ذکر 68٪ نے زور دے کر کہا کہ انتخابی عمل میں اداروں کی طرف سے کوئی بھی مداخلت ناقابل قبول ہے۔ تاہم، جب بیرونی قوتوں کی ممکنہ مداخلت کے بارے میں سوال کیا گیا تو 27 فیصد نے امریکہ کی طرف انگلیاں اٹھائیں، جب کہ 7 فیصد نے بھارت پر شکوک کا اظہار کیا۔

یہ سروے پاکستانی نوجوانوں میں مروجہ جذبات پر روشنی ڈالتا ہے، جس میں فوج پر کافی اعتماد اور دیگر اہم اداروں میں اعتماد کی مختلف سطحوں کو اجاگر کیا گیا ہے۔ نتائج ملکی اور بین الاقوامی دونوں محاذوں پر رائے میں فرق کی تجویز کرتے ہیں، ملک کے اندر کثیر جہتی نقطہ نظر کی ایک باریک تفہیم کی ضرورت پر زور دیتے ہیں۔

نتائج قوم کی سمت کو تشکیل دینے والی حرکیات کو سمجھنے کے لیے رائے عامہ کا جائزہ لینے کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہیں۔ جیسے ہی پاکستان اپنے راستے پر آگے بڑھ رہا ہے، سروے ایک اہم بیانیہ کی عکاسی کرتا ہے، جو کہ نوجوان آبادی کے درمیان اعتماد اور شکوک و شبہات دونوں کی نشاندہی کرتا ہے، جو پالیسی سازوں اور تجزیہ کاروں کے لیے یکساں قیمتی بصیرت فراہم کرتا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی: ایک تولہ کی قیمت اب 242,000 روپے ہے

مقامی مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت میں 6200 روپے کی کمی دیکھی گئی۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *