حکومتی پالیسیوں پر جوبائیڈن انتظامیہ کی ایک اور رکن مستعفی ہو گئے

بائیڈن انتظامیہ کے ہوم لینڈ سیکیورٹی ڈیپارٹمنٹ کی ایک سینئر رکن لیلا گرین برگ نے غزہ کے حوالے سے امریکی پالیسیوں کے خلاف احتجاجاً استعفیٰ دے دیا ہے۔ ڈپٹی چیف آف اسٹاف کے طور پر خدمات انجام دینے والے گرین برگ نے یہ قدم بے گناہ فلسطینیوں کے خلاف جاری اسرائیلی مظالم کو اپنے استعفیٰ کی بنیادی وجہ قرار دیتے ہوئے اٹھایا۔

بائیڈن انتظامیہ کی اسرائیل کے لیے غیر متزلزل حمایت، بشمول ہتھیاروں اور امداد کی دیگر اقسام کو، انتظامیہ کے اندر سے بھی بڑھتی ہوئی تنقید کا سامنا ہے۔ رپورٹس کے مطابق گرین برگ نے امریکہ میں ایک احتجاج کے دوران اپنا استعفیٰ پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ غزہ کے عوام کے مصائب میں معاون پالیسیوں کی حمایت جاری نہیں رکھ سکتیں۔

اپنے استعفے کے خط میں، گرین برگ نے صدر بائیڈن کو ایک حالیہ بیان کے لیے خصوصی طور پر پکارا جس میں انہوں نے دعویٰ کیا کہ اسرائیل کے بغیر دنیا میں یہودیوں کے لیے کوئی محفوظ پناہ گاہ نہیں ہوگی۔ گرین برگ نے اس بیان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ غلط طور پر تجویز کرتا ہے کہ یہودی اپنی حفاظت کے لیے فوجی طاقت پر منحصر ہیں۔

غزہ کے تنازعے کے نتیجے میں 35,000 سے زائد فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں جن میں بچوں اور خواتین کی ایک قابل ذکر تعداد شامل ہے۔ اسرائیل کی مسلسل بمباری اور ناکہ بندی نے غزہ میں انسانی بحران کو مزید بڑھا دیا ہے جس کی وجہ سے عالمی برادری کی جانب سے بڑے پیمانے پر مذمت کی جا رہی ہے۔

مزید برآں، اسرائیل کو مبینہ طور پر فوجی اہلکاروں کی شدید کمی کا سامنا ہے، جیسا کہ اسرائیلی میڈیا نے انکشاف کیا ہے۔ شمالی غزہ اور رفح میں اسرائیلی فوج کے حالیہ حملوں کے نتیجے میں 60 سے زائد فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں، جس سے خطے میں کشیدگی میں مزید اضافہ ہو گیا ہے۔

غزہ کی صورتحال بدستور تشویشناک ہے، جس میں جاری تشدد اور مصائب کا کوئی فوری حل نظر نہیں آتا۔ غزہ میں اسرائیل کے اقدامات کے لیے بائیڈن انتظامیہ کی مسلسل حمایت نے غم و غصے کو جنم دیا ہے اور اس تنازعے میں امریکہ کے کردار پر سوالات اٹھائے ہیں۔

گرین برگ کا استعفیٰ بائیڈن انتظامیہ کے اندر غزہ کے بحران سے نمٹنے پر بڑھتے ہوئے اختلاف کو اجاگر کرتا ہے۔ جیسا کہ بین الاقوامی برادری تشدد کے خاتمے اور تنازعہ کے دیرپا حل کا مطالبہ کرتی ہے، بائیڈن انتظامیہ کو غزہ اور اسرائیل کے حوالے سے اپنی پالیسیوں کا از سر نو جائزہ لینے کے لیے بڑھتے ہوئے دباؤ کا سامنا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

زلفی بخاری پی ٹی آئی چیئرمین کے مشیر برائے بین الاقوامی امور مقرر

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب کی جانب سے جاری کردہ باضابطہ نوٹیفکیشن …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *