15 اپریل تک کیلے اور پیاز کی در امد پہ پابندی

وفاقی کابینہ نے 15 اپریل 2024 تک کیلے اور پیاز کی درآمد پر پابندی لگا کر مارکیٹ کو مستحکم کرنے کے لیے فیصلہ کن کارروائی کی ہے۔ اس اقدام کا مقصد مارکیٹ میں ان ضروری اشیاء کی وافر مقدار میں دستیابی کو یقینی بنانا اور ممکنہ قیمتوں میں اضافے کو روکنا ہے۔ یہ فیصلہ نو منتخب وفاقی کابینہ کے افتتاحی اجلاس کے دوران کیا گیا، جس کی صدارت وزیراعظم شہباز شریف نے کی۔ اجلاس میں ملک کی معاشی صورتحال پر توجہ مرکوز کی گئی اور اس کے نتیجے میں اہم مسائل کو حل کرنے کے لیے کئی اہم فیصلے کیے گئے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے اشیائے ضروریہ کی مستحکم فراہمی کو یقینی بنانے کی اہمیت پر زور دیا اور ان کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کے لیے فوری طور پر کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔ یہ کمیٹی صوبائی حکومتوں کے ساتھ مل کر ان اشیاء کی قیمتوں کی نگرانی اور ریگولیٹ کرے گی، اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ وہ عام لوگوں کے لیے سستی رہیں۔

کیلے اور پیاز کی درآمد پر پابندی کے علاوہ، کابینہ نے منافع خوری اور قیمتوں میں غیر ضروری اضافے سے نمٹنے کے لیے اقدامات پر بھی غور کیا۔ وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ ذاتی فائدے کے لیے قیمتوں میں ہیرا پھیری کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس طرح کے طرز عمل کو برداشت نہیں کیا جائے گا اور حکومت اپنے شہریوں کی فلاح و بہبود کو یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے۔

کیلے اور پیاز کی درآمد پر پابندی لگانے کا فیصلہ ایسے وقت میں آیا ہے جب ضروری اشیائے خوردونوش کی قیمتیں پہلے ہی بڑھ رہی ہیں۔ رمضان المبارک سے قبل پیاز کی قیمت 100 روپے تک بڑھ گئی۔ 300 فی کلو گرام، صارفین کے بجٹ پر دباؤ ڈال رہا ہے۔ حکومت کے مداخلت اور قیمتوں کو مستحکم کرنے کے فیصلے کا مقصد عوام کو ریلیف فراہم کرنا اور اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ انہیں سستی قیمتوں پر ضروری اشیاء تک رسائی حاصل ہو۔

وزیراعظم شہباز شریف کی جانب سے منافع خوری اور قیمتوں میں ہیرا پھیری کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت ایسی سرگرمیوں میں ملوث افراد کو سخت پیغام دیتی ہے۔ اپنے شہریوں کی فلاح و بہبود کو یقینی بنانے کے لیے حکومت کا عزم قیمتوں کو مستحکم کرنے اور ضروری اشیاء کی دستیابی کو یقینی بنانے کے لیے اس کے فعال انداز میں واضح ہے۔

آخر میں، وفاقی کابینہ کا کیلے اور پیاز کی درآمدات پر 15 اپریل 2024 تک پابندی عائد کرنے کا فیصلہ، قیمتوں میں استحکام اور مارکیٹ میں اشیائے ضروریہ کی دستیابی کو یقینی بنانے کی جانب درست سمت میں ایک قدم ہے۔ منافع خوری اور قیمتوں میں ہیرا پھیری سے نمٹنے کے لیے حکومت کا عزم اپنے شہریوں کے مفادات کے تحفظ کے لیے اس کے عزم کو ظاہر کرتا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

شاہ محمود قریشی پر 9 مئی کو آتش زنی کیس میں فرد جرم عائد

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی پر 9 مئی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *