کپتان کو تبدیل کرنے سے پاکستانی ٹیم کو آگے کے بجائے پیچھے چلی گئی ہے: ہربھجن سنگھ

سابق بھارتی کرکٹر ہربھجن سنگھ نے حال ہی میں پاکستان کرکٹ ٹیم کو درپیش چیلنجز پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کھلاڑیوں کو مسلسل کارکردگی کے ذریعے اعتماد بحال کرنے کی ضرورت پر روشنی ڈالی۔ ‘کرکٹ پاکستان’ کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں، سنگھ نے پاکستان کے بھرپور ٹیلنٹ کو تسلیم کیا لیکن ان کی حالیہ کارکردگی کو متاثر کرنے والے اعتماد میں نمایاں کمی کی نشاندہی کی۔

سنگھ نے زور دے کر کہا، “پاکستانی ٹیم مجموعی طور پر ٹیلنٹ رکھتی ہے، لیکن اعتماد میں واضح کمی ہے۔ اسے دوبارہ بنانے کے لیے، انہیں مسلسل اچھا کھیلنا چاہیے۔ اس سے نہ صرف ان کا اعتماد بڑھے گا بلکہ ان کی کرکٹ کی مہارت میں بھی اضافہ ہوگا۔”

کپتانی میں حالیہ تبدیلیوں اور پاکستان کی ورلڈ کپ کارکردگی پر ان کے اثرات پر غور کرتے ہوئے، سنگھ نے اس فیصلے کو ٹیم کی کمزوری کا سبب قرار دیا۔ ہندوستان اور پاکستان دونوں میں کرکٹ کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہوئے، ان کا خیال تھا کہ یہ فیصلہ شاید بروقت نہیں تھا لیکن کھلاڑیوں کے کیریئر پر اس کے ممکنہ گہرے اثرات پر زور دیا۔

“یہ ورلڈ کپ کی مایوس کن کارکردگی کا ردعمل تھا۔ پاکستان نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کیا، اور کپتانی کی تبدیلی اس کا ردعمل تھا۔ ہندوستان اور پاکستان دونوں میں کرکٹ کو بہت اہمیت حاصل ہے۔ ورلڈ کپ میں کسی ٹیم کا خراب مظاہرہ کھلاڑیوں پر گہرا اثر ڈال سکتا ہے۔” کیریئر،” سنگھ نے کہا۔

انہوں نے مزید کہا کہ “یہ بات واضح ہے کہ دونوں ممالک میں کرکٹ کو بہت اہمیت دی جاتی ہے۔ اگر کوئی ٹیم ورلڈ کپ میں کم کارکردگی دکھاتی ہے تو اس کا کھلاڑیوں پر گہرا اثر پڑتا ہے۔ جب کہ یہ ایک ردعمل تھا، میں سمجھتا ہوں کہ فیصلہ بروقت نہیں ہوا ہوگا۔ آپ واپس، اور شاید، یہ فیصلہ ان میں سے ایک ہے۔”

سنگھ نے بابر اعظم کی صلاحیتوں کی تعریف کرتے ہوئے اختتام کیا لیکن دوسرے کھلاڑیوں کے تعاون کو تسلیم کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے کامیابی کے لیے ٹیم کی اجتماعی کوششوں کو تسلیم کرنے پر زور دیا اور ٹیم کو مضبوط بنانے کے لیے اتحاد اور تعاون پر زور دیا۔

بابر اعظم کی صلاحیتوں کو تسلیم کرتے ہوئے ہمیں دوسرے باصلاحیت کھلاڑیوں کو نظر انداز نہیں کرنا چاہیے۔ ایک کھلاڑی کی بڑے پیمانے پر تعریف کرنا، دوسرے کو نظر انداز کرنا دونوں ممالک میں ایک عام رجحان ہے۔ ٹیمیں صرف ایک کھلاڑی کی وجہ سے نہیں جیتتیں، یہ ٹیم کی اجتماعی کوشش ہے۔ اسے مضبوط بناتا ہے۔ بابر ایک اچھا کھلاڑی ہے، اور مجھے امید ہے کہ وہ رنز بنانا شروع کر دے گا۔ دوسرے کھلاڑی بھی قابل ہیں، اور ان کا تعاون ٹیم کی مضبوطی اور کامیابی کے لیے ضروری ہے،” ہربھجن سنگھ نے اظہار کیا۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

وزیراعلیٰ پنجاب کا فرانزک ٹریننگ لیب کو یونیورسٹیوں کے ساتھ شراکت کرنے کا حکم

صوبے میں فرانزک سائنس کی تعلیم اور صلاحیتوں کو بڑھانے کے لیے ایک اہم اقدام …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *