پاکستان کے 2024 کے انتخابات میں پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن کی انتخابی حکمت عملی

جیسے جیسے پاکستان میں 2024 کے انتخابات قریب آرہے ہیں، سیاسی منظر نامے پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)، پاکستان مسلم لیگ-نواز (پی ایم ایل-این) اور دیگر جماعتوں کے درمیان سخت مقابلے دیکھنے کو مل رہے ہیں۔ سینیٹر ہمایوں مہمند نے نجی ٹی وی کے پروگرام کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے پی ٹی آئی کی انتخابی حکمت عملی کا خاکہ پیش کرتے ہوئے ووٹرز تک رسائی کے لیے موبائل فون کے استعمال پر زور دیا۔ سینیٹر مہمند نے ملک میں تقریباً 150 ملین موبائل فونز کی وسیع پیمانے پر دستیابی کو دیکھتے ہوئے موبائل فون کے ذریعے ووٹرز تک پہنچنے کے منصوبے پر روشنی ڈالی۔ ایک اندازے کے مطابق 110 ملین اہل ووٹرز کے ساتھ، پی ٹی آئی کا مقصد ووٹوں کو محفوظ بنانے اور کامیاب انتخابی نتائج کو یقینی بنانے کے لیے اس ٹیکنالوجی کا فائدہ اٹھانا ہے۔ انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ مخصوص نشستیں حاصل کیے بغیر بھی پی ٹی آئی مرکزی، پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے علاقوں میں حکومتیں بنا سکتی ہے۔ مخصوص نشستوں کی ضرورت پر توجہ دیتے ہوئے، مہمند نے مقابلہ شدہ حلقوں کے لیے منصوبہ بندی کی ضرورت کو تسلیم کیا۔ انہوں نے پولنگ کے دن زیادہ ووٹر ٹرن آؤٹ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ 80-70% ٹرن آؤٹ انتخابی بدعنوانیوں کو روکے گا۔ خاص طور پر، انہوں نے سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلے کا ذکر کیا، جس میں الیکشن کمیشن آف پاکستان (ECP) کی جانب سے پی ٹی آئی کی نااہلی کو کالعدم قرار دیا گیا اور پارٹی کی قانونی حیثیت کو بحال کیا۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں سپریم کورٹ نے پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف ای سی پی کی درخواست منظور کرلی۔ چیف جسٹس نے سماعت کے دوران اس بات پر زور دیا کہ الیکشن کمیشن پی ٹی آئی کو انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے کئی مہینوں سے نوٹس جاری کر رہا ہے اور اگرچہ پی ٹی آئی نے انتخابات کرائے لیکن کچھ بے ضابطگیاں ہوئیں۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ یہ ثابت نہیں ہوا کہ پی ٹی آئی نے انٹرا پارٹی الیکشن کرائے ہیں۔ نتیجتاً، پی ٹی آئی کے امیدواروں سے پارٹی نشان چھین لیا گیا، اور تمام امیدواروں کو آئندہ انتخابات کے لیے متبادل نشان تفویض کر دیا گیا۔ ان پیشرفتوں کی روشنی میں، پاکستان میں 2024 کے انتخابات تک کا سیاسی منظر نامہ متحرک اور چیلنجنگ ہے۔ قانونی چیلنجوں اور تنازعات کے ساتھ ساتھ موبائل ٹیکنالوجی اور اسٹریٹجک منصوبہ بندی پر پی ٹی آئی کا زور، ایک ایسے الیکشن کا مرحلہ طے کرتا ہے جسے قریب سے دیکھا جائے گا اور اس کا بھرپور مقابلہ کیا جائے گا۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی: ایک تولہ کی قیمت اب 242,000 روپے ہے

مقامی مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت میں 6200 روپے کی کمی دیکھی گئی۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *