یکم جنوری سے گیس کی قیمتوں میں اضافہ، عوام پر بوجھ بڑھ گیا

یکم جنوری 2024 کو اوگرا (آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی) نے سوئی سدرن کے لیے گیس کی قیمتوں میں 8.57 فیصد اور سوئی ناردرن کے صارفین کے لیے 35.13 فیصد اضافے کا اعلان کیا۔ اس اضافے سے روپے کا بوجھ پڑنے کا امکان ہے۔ عوام پر 98 ارب۔

تفصیلات کے مطابق پہلے ہی بھاری اور ناقابل برداشت بلوں کے بوجھ تلے دبے گیس صارفین کو ایک اور جھٹکا لگ گیا ہے۔ اوگرا نے قیمتوں میں مزید اضافے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ قیمتوں میں اضافے کی تلافی کی جاسکے۔ 30 جون 2024 تک 98 بلین کا نقصان۔ یکم جنوری 2024 سے موثر، سوئی ناردرن کے لیے گیس کی قیمتوں میں 35.13 فیصد اضافہ ہوا، جبکہ سوئی سدرن میں 8.57 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔

یہ مالی سال 2023-24 کے دوران گیس کی قیمتوں میں دوسرا اضافہ ہے۔ 2 فروری 2024 کو اوگرا نے ریگولیٹڈ گیس کی قیمت پچھلے روپے سے بڑھانے کی سفارش کی۔ 1291 فی MMBTU (ملین برٹش تھرمل یونٹ) سے روپے۔ 1590 فی MMBTU، 2 جون 2023 کو مقرر کردہ قیمت سے اوسطاً 23.16% کے اضافے کی نمائندگی کرتا ہے۔

آئی ایم ایف نے اس سے قبل حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ گیس کی قیمتوں پر نظر ثانی کے طریقہ کار کو دو سال کے اندر لاگو کرے تاکہ غیر ملکی قرضوں پر انحصار کم کیا جا سکے، 1.25 ٹریلین جو اس وقت 1000 ارب روپے ہیں۔ ۔

اوگرا ہر دو سال بعد گیس کی قیمتوں کا اعلان کرنے کا پابند ہے، حکومت کو ہر مالی سال کے یکم جولائی اور یکم جنوری کو قیمتوں پر نظرثانی کرنے کا پابند بنایا گیا ہے۔

2 فروری 2024 کو اس کی آفیشل ویب سائٹ پر اپ لوڈ کیے گئے فیصلوں کے مطابق سوئی ناردرن گیس کی قیمتیں بڑھ کر روپے تک پہنچ گئی ہیں۔ پہلے سے طے شدہ روپے سے 1673.82 فی ایم ایم بی ٹی یو۔ 2 جون 2023 کو 1238.68 فی ایم ایم بی ٹی یو۔ اسی طرح سوئی سدرن گیس کی قیمتیں روپے سے بڑھ گئی ہیں۔ 1350.68 سے روپے 1466.40 فی ایم ایم بی ٹی یو۔

ایک سینئر اہلکار نے بتایا کہ گیس کی قیمتوں کا یہ موازنہ یکم جنوری 2024 سے لاگو کرنے کے عزم پر مبنی ہے، جو کہ مالی سال 2023-24 کے اندر یکم جولائی سے لاگو ہونے کے لیے پہلے سے طے شدہ شیڈول سے ہٹ کر ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی: ایک تولہ کی قیمت اب 242,000 روپے ہے

مقامی مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت میں 6200 روپے کی کمی دیکھی گئی۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *