سیاسی آدمی ہوں، 19 ماہ سے کہہ رہا ہوں بات چیت کرنے کےلیے تیار ہوں : عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کے بانی عمران خان نے کہا ہے کہ ایک سیاسی شخصیت کے طور پر وہ بات چیت کے لیے تیار ہیں اور گزشتہ 19 ماہ سے بات چیت کرنا چاہتے ہیں۔

اڈیالہ جیل میں صحافیوں سے گفتگو کے دوران عمران خان نے ایران کی جانب سے حملوں کی مذمت کرتے ہوئے پڑوسی ممالک بالخصوص ایران سے تعلقات بہتر کرنے کی ضرورت کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایران کے ساتھ پاکستان کے کشیدہ تعلقات اسرائیل جیسے دشمنوں کو فائدہ پہنچاتے ہیں اور تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ بہتر تعلقات قائم کرنا بہت ضروری ہے۔

عمران خان نے تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات کو فروغ دینے کی اہمیت کو اجاگر کیا اور افسوس کا اظہار کیا کہ 5 اگست کو بھارت کے ساتھ دوستی اور مذاکرات کی کوششوں میں رکاوٹ ڈالی گئی۔

ایک صحافی کے سوال کے جواب میں عمران خان نے موجودہ سیاسی صورتحال پر زور دیتے ہوئے بات چیت میں شامل ہونے کے لیے اپنی تیاری کا اعادہ کیا جہاں ان کے خیال میں ایک کنٹرولڈ پارلیمنٹ ضروری ہے۔ انہوں نے تسلیم کیا کہ ایک کمزور حکومت بنانا ایک اہم غلطی تھی، اور کمزور انتظامیہ کے بجائے نئے انتخابات کا مطالبہ کیا جانا چاہیے تھا۔ انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ انتخابات کے بعد اپوزیشن کا کردار کمزور مخلوط حکومت سے نمٹنے سے بہتر ہوگا۔

پی ٹی آئی کے بانی نے زور دے کر کہا کہ مفلوج پارلیمنٹ اور کمزور حکومت کے ذریعے پاکستان کے معاشی حل حاصل نہیں کیے جا سکتے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ صرف ایک مضبوط حکومت ہی اصلاحات نافذ کر سکتی ہے اور بہتری لا سکتی ہے۔

عمران خان نے مذاکرات پر آمادگی ظاہر کرتے ہوئے اپنی سیاسی نوعیت کا مزید انکشاف کیا۔ انہوں نے اس سے قبل پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (PDM) کی تین رکنی کمیٹی کے ساتھ بات چیت کا ذکر کیا۔ تاہم پی ڈی ایم کی اس شرط کے باعث بات چیت آگے نہیں بڑھ سکی کہ انتخابات عمر عطا بندیال کی ریٹائرمنٹ کے بعد ہی ہونے چاہئیں۔

انہوں نے پی ٹی آئی کی 16 ماہ کی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے اسے تاریخ کا بدترین دور قرار دیا۔ عمران خان نے سنگاپور کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ پڑوسی ممالک کو تنازعات میں نہیں پڑنا چاہیے جہاں انصاف اور استحکام نے سرمایہ کاری کو راغب کیا ہے۔

خیال رہے کہ سابق وزیراعظم عمران خان اس وقت اڈیالہ جیل میں قید ہیں۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

طلال چوہدری کی مخصوص نشستوں کے فیصلے پر تنقید، دعویٰ یہ سیاسی استحکام کو نقصان پہنچاتا ہے

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما طلال چوہدری نے مخصوص نشستوں کے حوالے سے حالیہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *