توشہ خانہ کہس میں اہم پیشرفت سامنے آ گئی

اسلام آباد کی احتساب عدالت توشہ خانہ ریفرنس کیس میں اہم موڑ سامنے آ گیا ، جس میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے بانی عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی شامل ہیں۔ یہ کارروائی راولپنڈی کی اڈیالہ جیل کی حدود میں ہوئی، جہاں جج محمد بشیر نے سماعت کی۔

عدالت نے بشریٰ بی بی کے بیان کو احتیاط سے دستاویز کیا، جس میں بیان نمبر 342 میں ایک جامع ریکارڈ شامل ہے۔ اپنے مقدمے کے حوالے سے بشریٰ بی بی کو تفتیشی سوالات پر مشتمل ایک سوالنامہ پیش کیا گیا،

توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت کے دوران عدالت کی جانب سے بانی چیئرمین پی ٹی آئی کو 27 اور بشریٰ بی بی کو 25 سوالات پر مشتمل سوالنامہ فراہم کیا گیا تھا۔

جو جاری قانونی جانچ کا ایک اہم حصہ ہے۔ لیکن جج محمد بشیر کی طبیعت ناساز ہونے کے باعث سماعت کے درمیانی وقفہ سے سماعت ہوئی۔ اس غیر متوقع صورت حال کا سامنا کرتے ہوئے، حکام نے فوری طور پر جیل کے ہسپتال میں طبی معائنے کا بندوبست کیا، جس میں ان ہائی پروفائل قانونی کارروائیوں سے وابستہ شدت اور تناؤ کی نشاندہی کی گئی۔۔

توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت کے دوران سابق وزیراعظم عمران خان نے احتساب عدالت کے جج محمد بشیر سے مکالمہ کرتے ہوئے یہ کہا کہ آپ نے ہمارا حق دفاع ختم کیا، میں گواہوں پر خود جرح کرنا چاہتا تھا، میری گزارش ہے کہ ہمارا حق جرح بحال کیا جائے، کیا آج ہی سزا کا اعلان کرنا ہے، اس پر جج محمد بشیر نے کہا کہ آپ پریشان نہ ہوں۔

عمران خان نے کہا کہ ہمارے پاس توشہ خانہ تحائف کی اصل قیمت آئی ہے، ہم نے اس لئے جرح کرنی تھی،میں نے جھوٹے گواہوں کو ایکسپوز کرنا تھا ،آپ نے جلدی جلدی میں سب کچھ کیا، میرے اوپر جو الزام ہے میرے خلاف جھوٹے گواہوں کو پیش کیا گیا، میں کئی بار کہہ رہا ہوں میری بیوی کا اس کیس سے کوئی تعلق نہیں ،وزیر اعظم ہاوس کے ملٹری سیکرٹری کے ذریعے جھوٹ بلوایا گیا۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی: ایک تولہ کی قیمت اب 242,000 روپے ہے

مقامی مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت میں 6200 روپے کی کمی دیکھی گئی۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *