ٹی ٹوئنٹی میں نیوزی لینڈ کو شکست دے کر واش وائٹ سے بچ گیا.

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ٹی ٹوئنٹی سیریز کے سنسنی خیز اختتام پر پاکستان نے پانچویں میچ میں 42 رنز سے شاندار فتح حاصل کی۔ 21 جنوری 2024 کو کرائسٹ چرچ میں کھیلے گئے میچ میں پاکستان کے غلبے کا مظاہرہ کرتے ہوئے نیوزی لینڈ کے حق میں 1-4 کی آخری اسکور لائن کے ساتھ سیریز اپنے نام کر لی۔

سیریز کے فائنل میں پاکستان نے پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کرتے ہوئے کیوی ٹیم کو 135 رنز کا ہدف دیا۔ تاہم، پاکستانی بیٹنگ لائن اپ کو ابتدائی دھچکے کا سامنا کرنا پڑا، مقررہ 20 اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر 134 رنز بنا سکے۔ شائقین میں مایوسی واضح تھی کیونکہ قومی ٹیم بیٹنگ کے محاذ پر فائدہ اٹھانے کے لیے جدوجہد کر رہی تھی۔

نیوزی لینڈ کا باؤلنگ اٹیک، جس کی قیادت ٹم ساؤتھی، میٹ ہنری، لوکی فرگوسن، اور ایش سودھی جیسے کھلاڑیوں نے کی، زبردست ثابت ہوا، مجموعی طور پر آٹھ وکٹیں حاصل کیں۔ پاکستان کے لیے سب سے زیادہ اسکورر محمد رضوان تھے جنہوں نے مشکل حالات میں لچک کا مظاہرہ کرتے ہوئے 38 گیندوں پر 38 رنز بنائے۔

پاکستان کے ہدف کے جواب میں نیوزی لینڈ کو مشکل کام کا سامنا کرنا پڑا۔ تاہم، عماد وسیم، محمد نواز، اور کپتان شاداب خان کی قیادت میں پاکستانی باؤلرز اس موقع پر پہنچ گئے۔ عماد وسیم نے 24 رنز کے عوض تین اہم وکٹیں حاصل کرکے اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا جب کہ محمد نواز اور شاداب خان نے دو دو وکٹیں حاصل کیں۔ اجتماعی کوشش کے نتیجے میں نیوزی لینڈ 17.2 اوورز میں محض 92 رنز پر ڈھیر ہوگیا۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے گلین فلپس اور فن ایلن نے بالترتیب 26 اور 22 رنز بنائے۔ تاہم، بقیہ کیوی بیٹنگ آرڈر نے نظم و ضبط والے پاکستانی باؤلنگ اٹیک کے خلاف جدوجہد کی۔ فائنل میچ میں فتح نے پاکستان کے لیے ایک اہم تبدیلی کی نشاندہی کی، جس نے سیریز میں کچھ فخر کو بچایا

T20 سیریز کے دوران کئی اہم کھلاڑیوں نے قابل ذکر شراکتیں دیں۔ فخر زمان، سعود شکیل اور سٹار بلے باز بابر اعظم نے اپنی بلے بازی کے جوہر دکھائے جب کہ اسامہ میر، زمان خان اور عماد وسیم جیسے بولرز نے ٹیم کی کارکردگی میں اہم کردار ادا کیا۔

سیریز کے اختتام پر فائنل میچ میں پاکستان کے لیے پلیئنگ الیون میں تبدیلیاں کی گئیں۔ سیف بدر، حارث رؤف، اور ابھرتے ہوئے ٹیلنٹ وسیم جونیئر کو موقع دیا گیا، جس نے ٹیم کی تشکیل کے حوالے سے حکمت عملی کا مظاہرہ کیا۔

جہاں سیریز کا نتیجہ نیوزی لینڈ کے حق میں تھا، وہیں پانچویں میچ میں پاکستان کی جیت نے چاندی کی لکیر فراہم کی اور ٹیم کی صلاحیت کو اجاگر کیا۔ کھلاڑیوں نے لچک کا مظاہرہ کرتے ہوئے مستقبل کے مقابلوں میں مسابقتی برتری کا وعدہ کیا۔ اس سیریز نے، اپنے اتار چڑھاؤ کے ساتھ، بین الاقوامی سطح پر کرکٹ دشمنیوں کی مسلسل ابھرتی ہوئی داستان میں ایک اور باب کا اضافہ کیا۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی: ایک تولہ کی قیمت اب 242,000 روپے ہے

مقامی مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت میں 6200 روپے کی کمی دیکھی گئی۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *