عام انتخابات کے پیش نظر آصف زرداری نے حکمت عملی

آئندہ عام انتخابات کے پیش نظر آصف زرداری نے حکمت عملی کے ساتھ اپنی توجہ پنجاب کے اہم میدان جنگ پر مرکوز کر دی ہے۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ سابق صدر نے پیپلز پارٹی کی قیادت کے لیے لاہور کو مرکز کے طور پر نشانہ بناتے ہوئے ایک اہم اقدام کیا ہے، شہر میں اہم اجلاس کی تیاریاں جاری ہیں۔ لاہور میں ایک قابل ذکر داخلہ بناتے ہوئے، آصف علی زرداری نے پنجاب میں انتخابی منظر نامے پر اثر انداز ہونے کے اپنے عزم کو واضح کیا ہے۔ ان کی توجہ خاص طور پر لاہور میں پیپلز پارٹی کی مرکزی قیادت کو حاصل کرنے پر مرکوز ہے۔ اس کو مستحکم کرنے کے لیے، شیری رحمان، نصیر حسین شاہ، اور مخدوم چوہدری جیسے اہم پارٹی رہنما لاہور میں 21 جنوری کو ہونے والے متوقع اجلاس کے انتظامات کو حتمی شکل دینے کے لیے اجلاس کر رہے ہیں۔ اس کے متوازی طور پر، پارٹی کے متحرک رہنما، بلاول بھٹو زرداری، NA-127 کے لیے انتخابی مہم کا ایک جامع جائزہ لینے کے لیے سرگرم عمل ہیں۔ مہم کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہوئے آصف علی زرداری نے پارٹی رہنماؤں سے شام کو بلاول ہاؤس میں اہم اجلاس طلب کر لیا ہے۔ رپورٹس بتاتی ہیں کہ سابق صدر کل NA-127 کا دورہ کرنے والے ہیں تاکہ ذاتی طور پر اس حلقے میں انتخابی مہم کی کوششوں کی نگرانی کی جا سکے۔ اس کے ساتھ ہی آصف علی زرداری پیپلز پارٹی کے امیدوار برائے PP-161 فیصل میر کے ہمراہ انتخابی دفتر کا افتتاح کرنے والے ہیں، جس سے آئندہ انتخابات میں خطے کی سٹریٹجک اہمیت کو مزید اجاگر کیا جائے گا۔ پنجاب کی حدود سے نکل کر سیاسی رفتار سندھ تک پھیلی ہوئی ہے، جہاں حال ہی میں بلاول بھٹو زرداری نے سندھ اسمبلی کے لیے پیپلز پارٹی کے امیدوار کی رہائش گاہ کا دورہ کیا۔ اس دورے کے دوران بلاول نے NA-196 کے پارٹی کارکنوں اور نمائندوں سے ملاقات کی، انتخابی مہم کی رفتار کو تیز کرنے کے لیے ٹھوس کوششوں کی ضرورت پر زور دیا۔ شہداد کوٹ میں ایک اہم خطاب میں بلاول بھٹو زرداری نے نہ صرف پارٹی کے اہم رہنماؤں کے جذبات سے جڑا بلکہ جاری انتخابی جنگ میں کوششیں تیز کرنے کی ہدایت بھی جاری کی۔ بلاول کے پی ایس 16 کے امیدوار سردار خان چانڈیو اور پی ایس 17 کے برہان چانڈیو کی رہائش گاہوں کے بعد کے دورے، انتخابی عمل میں گیمبر ورکرز کی فعال شرکت کو یقینی بنانے کے ان کے عزم کی آئینہ دار ہیں۔ پیپلز پارٹی کے چیئرمین کی حیثیت سے بلاول بھٹو زرداری نے شہدادکوٹ کے صدر قمر دین گوپانگ کی رہائش گاہ پر پہنچ کر اپنی رسائی کو مزید بڑھا دیا۔ یہاں، انہوں نے انتخابی مہم میں پارٹی کی فعال شمولیت کو تقویت دینے کے لیے ہدایات فراہم کیں، جس میں پیپلز پارٹی کی جانب سے آنے والے انتخابات کے پیش نظر اپنائے جانے والے جامع اور حکمت عملی کی مثال دی گئی۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی: ایک تولہ کی قیمت اب 242,000 روپے ہے

مقامی مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت میں 6200 روپے کی کمی دیکھی گئی۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *