پاکستان میں بھارتی خفیہ ایجنسی نے 2020 سے اب تک 20 افرادکو قتل کروایاہے :برطانوی میڈیا

برطانوی اخبار دی گارجین کی ایک حالیہ رپورٹ نے پاکستان میں بھارتی خفیہ ایجنسی را کی خفیہ کارروائیوں کو منظر عام پر لایا ہے۔ رپورٹ کے مطابق RAW 2020 سے پاکستان میں کم از کم 20 افراد کے قتل کی منصوبہ بندی میں ملوث ہے۔

رپورٹ میں پاکستان کے اندر خفیہ سرگرمیوں میں ہندوستانی انٹیلی جنس کارندوں کے ملوث ہونے پر روشنی ڈالی گئی ہے۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ ہندوستانی انٹیلی جنس کے سلیپر سیل کی آڑ میں کام کرنے والے یہ کارندے پاکستان میں ٹارگٹ کلنگ کرتے رہے ہیں۔

رپورٹ میں یہ بھی اشارہ کیا گیا ہے کہ ہندوستانی حکومت، خاص طور پر وزیر اعظم نریندر مودی کا دفتر، ان خفیہ کارروائیوں کی نگرانی اور ہدایت کاری میں سرگرم عمل ہے۔ اس انکشاف نے پاکستان میں مبینہ طور پر بھارت کی طرف سے ریاستی سرپرستی میں ہونے والی دہشت گردی کے بارے میں شدید تشویش پیدا کر دی ہے۔

مزید برآں، رپورٹ یہ بتاتی ہے کہ بھارتی کارروائیاں پاکستان سے باہر پھیلی ہوئی ہیں، جو مغربی ممالک میں بھی افراد کو نشانہ بنا رہی ہیں۔ خاص طور پر، خالصتان کے حامی علیحدگی پسندوں کو مبینہ طور پر ان کارروائیوں میں نشانہ بنایا گیا ہے۔

رپورٹ میں ان خفیہ کارروائیوں میں اضافے کی وجہ 2019 میں پلوامہ حملے کو قرار دیا گیا ہے، جس کے بعد سمجھے جانے والے خطرات کے خلاف مزید جارحانہ کارروائیاں کرنے کی طرف توجہ مرکوز کی گئی ہے۔

رپورٹ میں ایک سینئر بھارتی انٹیلی جنس افسر کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسی ان غیر ملکی کارروائیوں کو انجام دینے میں اسرائیلی اور روسی خفیہ ایجنسیوں سے متاثر رہی ہے۔ یہ انکشاف دنیا کے مختلف ممالک کی طرف سے کی جانے والی انٹیلی جنس کارروائیوں کی پیچیدہ اور باہم مربوط نوعیت کو اجاگر کرتا ہے۔

رپورٹ نے پاکستانی حکام کی طرف سے غم و غصے اور مذمت کو جنم دیا ہے، جنہوں نے ان الزامات کی فوری تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ پاکستانی حکومت نے عالمی برادری پر بھی زور دیا ہے کہ وہ ان انکشافات کا نوٹس لے اور بھارت کو اس کے اقدامات کا جوابدہ ٹھہرائے۔

آخر میں، دی گارڈین کی رپورٹ نے بھارتی خفیہ ایجنسیوں کے طرز عمل اور ریاستی سرپرستی میں ہونے والی دہشت گردی میں ان کے مبینہ ملوث ہونے پر سنگین سوالات اٹھائے ہیں۔ اس نے مستقبل میں بین الاقوامی قوانین کی اس طرح کی سنگین خلاف ورزیوں کو روکنے کے لیے تمام ممالک کے ذریعے کیے جانے والے انٹیلی جنس آپریشنز میں زیادہ شفافیت اور جوابدہی کی ضرورت پر بھی زور دیا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

شاہ محمود قریشی پر 9 مئی کو آتش زنی کیس میں فرد جرم عائد

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی پر 9 مئی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *