ایران نے ہیلی کاپٹر کے المناک حادثے کے بعد نئے قائم مقام وزیر خارجہ کا تقرر کیا

ہیلی کاپٹر حادثے کے بعد جس میں ایرانی صدر ابراہیم رئیسی اور وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان سمیت کئی اعلیٰ حکام کی جانیں گئیں، ایرانی حکومت نے فوری طور پر علی باقری کنی کو قائم مقام وزیر خارجہ مقرر کر دیا ہے۔ یہ تقرری ایرانی آئین کے آرٹیکل 135 کی دفعات کے تحت آتی ہے، جو صدر کو اس بات کی اجازت دیتا ہے کہ وہ مستقل وزیر کی غیر موجودگی میں تین ماہ تک کے لیے ایک عارضی وزیر کو نامزد کر سکتا ہے۔

اس حادثے کے بعد قوم اپنی قیادت کی ناگہانی شکست سے نڈھال ہے۔ ایرانی ہلال احمر نے تصدیق کی ہے کہ صدر رئیسی کی لاش ملبے سے برآمد ہوئی ہے۔ اس کے جواب میں سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے پانچ روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا ہے۔

آئین کے مطابق نائب صدر محمد مخبر کو دو ماہ کی مدت کے لیے عبوری صدر مقرر کیا گیا ہے۔ اس ہنگامہ خیز وقت میں حکمرانی کے تسلسل کو یقینی بناتے ہوئے اس فیصلے کو آیت اللہ خامنہ ای کی منظوری حاصل ہوئی۔ مخبر کو اب ایگزیکٹو برانچ کی قیادت کرنے اور عدلیہ اور قانون ساز اداروں کے سربراہان کے ساتھ 50 دنوں کے اندر انتخابات کا انعقاد کرنے کا کام سونپا گیا ہے، جیسا کہ سپریم لیڈر نے حکم دیا ہے۔

ملک غم کی حالت میں ہے، اور فوری تقرریوں کو حکومت کو مستحکم کرنے اور نظم و ضبط برقرار رکھنے کے اقدام کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔ عبوری دور کو ملکی اور بین الاقوامی سطح پر قریب سے دیکھا جائے گا، کیونکہ ایران سیاسی غیر یقینی کے اس دور سے گزر رہا ہے۔

رہبر معظم خامنہ ای نے اس عبوری دور میں ملک کے استحکام اور سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے حکومت کی مختلف شاخوں کے درمیان اتحاد اور ہم آہنگی کی اہمیت پر زور دیا۔ آئندہ انتخابات ایران کی مستقبل کی قیادت اور سمت کے تعین کے لیے اہم ہوں گے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

زلفی بخاری پی ٹی آئی چیئرمین کے مشیر برائے بین الاقوامی امور مقرر

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب کی جانب سے جاری کردہ باضابطہ نوٹیفکیشن …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *