مریم نواز نے پاکستان کی پہلی خاتون وزیر اعلیٰ کا حلف اٹھ لیا

مریم نواز نے پاکستان کی پہلی خاتون وزیر اعلی کے طور پر تاریخ رقم کی ہے، جو پنجاب میں 220 ووٹ لے کر اس عہدے پر منتخب ہوئی ہیں۔ حلف برداری کی تقریب گورنر ہاؤس پنجاب میں ہوئی جہاں گورنر محمد بلیغ الرحمان نے ان سے حلف لیا۔ تقریب میں مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف اور شہباز شریف بھی موجود تھے۔

وزیراعلیٰ کے انتخاب سے قبل پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلامقابلہ سپیکر ملک محمد احمد خان کی زیر صدارت ہوا۔ اجلاس کے دوران سپیکر نے ووٹنگ کے طریقہ کار کی وضاحت کی۔ تاہم، سنی اتحاد کونسل کے ارکان نے خلل پیدا کرنا شروع کر دیا، جس سے سپیکر نے انہیں سجاوٹ برقرار رکھنے پر زور دیا۔ ان کی درخواستوں کے باوجود، وہ کارروائی میں خلل ڈالتے رہے، جس کے نتیجے میں انہیں اسمبلی سے ہٹا دیا گیا۔

اس کے بعد سپیکر نے سنی اتحاد کونسل کے ارکان کو واپس آنے پر آمادہ کرنے کے لیے خلیل طاہر، عمران نذیر، سلمان رفیق، سمیع اللہ، ساحل شوکت اور علی گیلانی پر مشتمل ٹاسک فورس مقرر کی۔ تاہم وہ ڈٹے رہے اور اسمبلی کا بائیکاٹ کیا۔

مریم نواز کا انتخاب ہینڈ شو کے ذریعے کرایا گیا جس کے نتیجے میں انہیں 220 ووٹ ملے جب کہ سنی اتحاد کونسل کے رانا آفتاب کو صفر ووٹ ملے۔ پاکستان مسلم لیگ نواز کو 327 رکنی پنجاب اسمبلی میں 224 ارکان کی حمایت حاصل ہے، وزیراعلیٰ بننے کے لیے 186 ووٹ درکار ہیں۔ اس کے مقابلے میں سنی اتحاد کونسل کو 103 ارکان کی حمایت حاصل ہے۔

سنی اتحاد کونسل کی وجہ سے رکاوٹ کے باوجود انتخابی عمل مکمل ہوا، اور مریم نواز پاکستان کی پہلی خاتون وزیر اعلیٰ بن کر ابھریں، ملک کی سیاسی تاریخ میں ایک اہم سنگ میل ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

وزیراعلیٰ پنجاب کا فرانزک ٹریننگ لیب کو یونیورسٹیوں کے ساتھ شراکت کرنے کا حکم

صوبے میں فرانزک سائنس کی تعلیم اور صلاحیتوں کو بڑھانے کے لیے ایک اہم اقدام …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *