عام انتخابات کے بعد ملک گیر دھندلی کے خلاف دھرنے

حالیہ عام انتخابات کے بعد پاکستان کے کئی صوبوں بشمول سندھ، بلوچستان اور خیبر پختونخوا میں مبینہ انتخابی بے ضابطگیوں اور نتائج کے اعلان میں تاخیر پر مختلف سیاسی جماعتوں کے احتجاج اور دھرنے دیکھے جا رہے ہیں۔

کراچی میں جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) نے صوبائی الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرے میں وفاقی اور صوبائی دونوں نشستوں پر انتخاب لڑنے والے جے یو آئی (ف) کے امیدواروں نے شرکت کی۔ مولانا راشد سومرو نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے الزام لگایا کہ بیلٹ ٹمپرنگ اور پہلے سے بھرے ہوئے بیلٹ کے واقعات ہیں، یہ کہتے ہوئے کہ وہ انتخابی نتائج کو مسترد کرتے ہیں۔ انہوں نے جعلی مینڈیٹ والوں کو عہدہ سنبھالنے سے روکنے کے لیے اسمبلی کا گھیراؤ کرنے کا بھی اعلان کیا۔

8 فروری کے انتخابات کے نتیجے میں، پشتون تحفظ موومنٹ (PTM)، ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی، بلوچستان نیشنل پارٹی، اور نیشنل پارٹی پر مشتمل چار جماعتی اتحاد نے مبینہ انتخابی بدانتظامی کے خلاف بلوچستان بھر میں ریلیاں نکالیں۔

نصیر آباد میں پی بی 14 نصیر آباد 2 کے نتائج کے خلاف پاکستان پیپلز پارٹی کے کارکن کئی روز سے آرا آفس کے باہر احتجاج کر رہے ہیں۔پیپلز پارٹی کے امیدوار غلام رسول خان عمرانی کا کہنا ہے کہ احتجاج اس وقت تک جاری رہے گا جب تک الیکشن کمیشن کا فیصلہ نہیں آتا۔ پاکستان (ECP) نے منصفانہ اور شفاف نتائج کا اعلان کیا۔

مستونگ میں چار جماعتی اتحاد کی جانب سے ریلی اور احتجاج جاری ہے، مظاہرین مختلف شہروں سے مارچ کرتے ہوئے مرکزی چوک پر جمع ہوئے، جہاں وہ انتخابی انصاف کا مطالبہ کرتے ہوئے نعرے لگا رہے ہیں۔

بنوں میں پی ٹی آئی کے کارکنوں نے انتخابی نتائج کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے سات روز سے بنوں کوہاٹ روڈ بلاک کر رکھی ہے جس سے ٹریفک کی روانی میں خلل پڑا ہے۔
کرم ضلع کے صدر بازار میں، پی ٹی آئی کے حامی 9 فروری سے احتجاج کر رہے ہیں، اپنی شکایات کے لیے سدا ڈوگر روڈ بلاک کر رہے ہیں۔

شمالی وزیرستان میں پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ امیدوار این اے 40 میں انتخابی نتائج کے خلاف چھ روز سے دھرنا دے رہے ہیں، جس کی وجہ سے سڑکیں بند ہیں اور مقامی رہائشیوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

وزیراعلیٰ پنجاب کا فرانزک ٹریننگ لیب کو یونیورسٹیوں کے ساتھ شراکت کرنے کا حکم

صوبے میں فرانزک سائنس کی تعلیم اور صلاحیتوں کو بڑھانے کے لیے ایک اہم اقدام …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *