ٹیکس نیٹ آئی ایم ایف کی نہیں پاکستان کی ضرورت ہے اس سے پیچھے نہیں ہٹیں گے: وزیر خزانہ

وفاقی وزیر خزانہ نے پاکستان کے ٹیکس نیٹ کو وسعت دینے کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کے معاشی استحکام اور ترقی کے لیے ضروری ہے۔ لاہور میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ جو لوگ اس وقت ٹیکس نیٹ سے باہر ہیں انہیں سہولیات اور مراعات کی فراہمی کے ذریعے شامل ہونے کی ترغیب دی جائے گی۔ انہوں نے پچھلی حکومت کی کوششوں کی بھی تعریف کی اور انہیں نگران حکومتوں کے دوران بھی ملکی معاملات کو موثر طریقے سے چلانے کا سہرا دیا۔

ٹیکس نیٹ کو وسعت دینے کے علاوہ، وزیر نے نجکاری اور مختلف صنعتوں میں نجی شعبے کی زیادہ شمولیت کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ انہوں نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے بورڈز میں نجی شعبے کے نمائندوں کو شامل کرنے کے منصوبوں کا ذکر کیا، جس کا مقصد کارکردگی کو بہتر بنانا اور بجلی کی چوری کو کم کرنا ہے، جو ملک میں ایک دیرینہ مسئلہ ہے۔

ٹیکس، جی ڈی پی اور توانائی کے موضوع پر، وزیر نے ان مسائل کو حل کرنے کے لیے حکومت کے عزم کا اعادہ کیا۔ انہوں نے ٹیکس ریونیو میں اضافے، جی ڈی پی کی شرح نمو کو بہتر بنانے اور ملک کے لیے مستحکم توانائی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے کام کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے ان اہداف کے حصول کے لیے حکومت اور نجی شعبے دونوں کی جانب سے مشترکہ کوششوں کی ضرورت پر روشنی ڈالی۔

ٹیکس نیٹ میں اضافے کے حوالے سے وزیر نے واضح کیا کہ یہ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے دباؤ کا نتیجہ نہیں ہے بلکہ یہ پاکستان کی اپنی ترقی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ مارکیٹ میں کافی مقدار میں پیسہ گردش کر رہا ہے، اور ٹیکس نیٹ کو بڑھانا اس بات کو یقینی بنانے کے لیے بہت ضروری ہے کہ اس رقم کا صحیح حساب لیا جائے اور یہ ملک کی ترقی میں اپنا حصہ ڈالے۔

اپریل میں، حکومت نے ٹیکس رجسٹریشن اور تعمیل کی حوصلہ افزائی کے لیے ایک پہل شروع کی۔ وفاقی وزیر نے تاجروں اور کاروباری اداروں کو یقین دلایا کہ رضاکارانہ طور پر ٹیکس نیٹ میں شامل ہونے سے نہ صرف انہیں مختلف سہولیات تک رسائی حاصل ہو گی بلکہ ملک کی مجموعی اقتصادی ترقی میں بھی مدد ملے گی۔
وزیر کے ریمارکس نے ٹیکس نیٹ کو وسعت دینے، معاشی استحکام کو فروغ دینے، اور ملک کی ترقی کے لیے سرکاری اور نجی شعبوں کے درمیان تعاون کو فروغ دینے کے حکومتی عزم پر زور دیا۔ انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ حکومت پاکستان کے لیے پائیدار اقتصادی ترقی اور خوشحالی کے حتمی ہدف کے ساتھ ٹیکس محصولات میں اضافے، جی ڈی پی کی نمو کو بہتر بنانے اور توانائی کی مستحکم فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھے گی۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

اسلام آباد ہائی کورٹ نے توہین عدالت کیس میں فواد چوہدری کا جیل ٹرائل کالعدم قرار دے دیا

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کے حق میں فیصلہ سناتے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *