Supreme Court's senior judge Ijaz-ul-Ahsan
Supreme Court's senior judge Ijaz-ul-Ahsan

سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج اعجاز الاحسن نے استعفیٰ دے دیا

جسٹس مظاہر علی نقوی کے عہدے سے مستعفی ہونے کے ایک دن بعد جمعرات کو سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج اعجاز الاحسن نے استعفیٰ دے دیا۔ ذرائع کے مطابق جسٹس اعجاز الاحسن نے اپنا تحریری استعفیٰ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کو بھجوا دیا ہے تاہم متن تاحال سامنے نہیں آیا۔ سپریم کورٹ کے تیسرے سینئر ترین جج جسٹس اعجاز الحسن سپریم جوڈیشل کونسل کے آج کے اجلاس سے خاص طور پر غیر حاضر رہے۔ سنیارٹی میں اپنے عہدے کے ساتھ، جسٹس اعجاز الحسن کو سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے کردار کے لیے سرکردہ امیدوار سمجھا جاتا تھا، توقع ہے کہ وہ اکتوبر 2024 میں یہ عہدہ سنبھالیں گے۔ 10 مارچ، 2024 کو، درجہ بندی کے دوسرے سب سے سینئر جج جسٹس سردار طارق مسعود ریٹائر ہونے والے ہیں۔ جسٹس اعجاز کے مستعفی ہونے اور جسٹس سردار طارق کی ریٹائرمنٹ کے بعد جسٹس منصور سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج بن جائیں گے۔ مزید برآں، 25 اکتوبر 2024 کو چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی متوقع ریٹائرمنٹ کے ساتھ، جسٹس منصور علی شاہ چیف جسٹس کے کردار میں قدم رکھنے کے لیے تیار ہیں۔ یہ پیش رفت سپریم کورٹ کے قائدانہ ڈھانچے میں اہم تبدیلیوں کی نشاندہی کرتی ہے۔ آج جسٹس اعجاز الاحسن نے جسٹس مظاہر اکبر نقوی سے متعلق سپریم جوڈیشل کونسل کی کارروائی میں شرکت سے بھی معذرت کرلی۔ قابل ذکر ہے کہ جسٹس مظاہر اکبر نقوی، جنہوں نے ‘بدتمیزی’ کی شکایات اٹھائی تھیں، نے ایک روز قبل استعفیٰ دے دیا تھا۔ صدر کو جمع کرائے گئے اپنے استعفے میں، جسٹس نقوی نے لاہور ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ آف پاکستان دونوں میں بطور جج خدمات انجام دینے کے اعزاز پر اظہار تشکر کیا۔ انہوں نے معلومات کے عوامی ہونے اور کسی حد تک عوامی ریکارڈ کا حصہ ہونے کا حوالہ دیا، جس کی وجہ سے ان کے لیے ان حالات میں سپریم کورٹ کے جج کے طور پر کام جاری رکھنا ناقابل قبول ہے۔ ‘مناسب عمل’ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے، انہوں نے کہا کہ اس غور و فکر نے انہیں سپریم کورٹ کے جج کے عہدے سے مستعفی ہونے کے فیصلے پر مجبور کیا، جو فوری طور پر نافذ العمل ہے۔ سپریم کورٹ کے مستعفی جج نے اپنے استعفیٰ میں اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کی سختی سے تردید کی۔ اس سے قبل سپریم کورٹ کے سینئر جج جسٹس مظاہر علی نقوی نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ جج نے اپنا استعفیٰ صدر پاکستان کو بھجوا دیا ہے۔ سپریم جوڈیشل کونسل میں جسٹس نقوی کے خلاف بدعنوانی اور اثاثوں کی نامکمل تفصیلات کے الزام میں شکایت کی سماعت ہوئی۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

وزیراعلیٰ پنجاب کا فرانزک ٹریننگ لیب کو یونیورسٹیوں کے ساتھ شراکت کرنے کا حکم

صوبے میں فرانزک سائنس کی تعلیم اور صلاحیتوں کو بڑھانے کے لیے ایک اہم اقدام …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *