وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) نے ملک کے یوٹیلیٹی سیکٹر میں بدعنوانی اور بدعنوانی کے خلاف جنگ میں اہم پیش رفت

وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) نے ملک کے یوٹیلیٹی سیکٹر میں بدعنوانی اور بدعنوانی کے خلاف جنگ میں اہم پیش رفت کی ہے۔ ایک حالیہ کارروائی میں، ایف آئی اے حکام نے اوور بلنگ کے الزام میں فیصل آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی (فیسکو) کے اعلیٰ افسران سمیت تین افراد کو گرفتار کیا۔ یہ اقدام بدعنوانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے اور عوامی خدمت کے اداروں میں احتساب کو یقینی بنانے کے حکومتی عزم کی نشاندہی کرتا ہے۔

ایف آئی اے ترجمان کے مطابق گرفتار افراد پر بجلی کے بلوں میں ہیرا پھیری کا الزام ہے جس سے انہیں کافی مالی نقصان پہنچا۔ ملزمان نے مبینہ طور پر بلنگ ریکارڈ کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرتے ہوئے 30 سے ​​زائد صارفین کے بلوں میں 59738 اضافی یونٹس کا اضافہ کیا۔ اس دھوکہ دہی کی وجہ سے روپے سے زائد کی اوور بلنگ ہوئی۔ 1.58 کروڑ اس طرح کے اقدامات نہ صرف صارفین کو دھوکہ دیتے ہیں بلکہ یوٹیلیٹی فراہم کرنے والے کی ساکھ کو بھی نقصان پہنچاتے ہیں۔

گرفتار افراد میں سپرنٹنڈنٹ انجینئر ایس اے محمد عامر، ڈپٹی ڈائریکٹر آپریشنز غلام عباس اور میٹر انسپکٹر محمد شفیق شامل ہیں۔ یہ گرفتاریاں فیسکو کے اندر بدعنوانی اور بدعنوانی کے خلاف جاری تحقیقات کا حصہ ہیں۔ ایف آئی اے نے کہا ہے کہ مزید انکوائری جاری ہے تاکہ فراڈ کی مکمل حد تک پتہ چل سکے اور اس میں ملوث کسی بھی اضافی افراد کی نشاندہی کی جا سکے۔

اس واقعے نے فیسکو کے اندر بلنگ کے طریقہ کار کی شفافیت اور دیانتداری کے حوالے سے صارفین میں تشویش کو جنم دیا ہے۔ بہت سے رہائشیوں نے یوٹیلیٹی کمپنی کے اندر نگرانی اور جوابدہی کی واضح کمی پر غم و غصے کا اظہار کیا ہے۔ ایک ماہ کے اندر بجلی کے دو بلوں کے اجراء نے عوام میں مزید عدم اطمینان کو ہوا دی ہے اور مستقبل میں اس طرح کے عمل کو روکنے کے لیے سخت اقدامات کی ضرورت کو اجاگر کیا ہے۔

بجلی چوری اور بلنگ میں بے ضابطگیوں کی اطلاعات کے جواب میں، فیسکو نے ایسی سرگرمیوں کا پتہ لگانے کے لیے معلومات فراہم کرنے والے کے لیے انعام کا اعلان کیا ہے۔ اس اقدام کا مقصد عوام کو دھوکہ دہی اور بدعنوانی کے واقعات کی اطلاع دینے کی ترغیب دینا ہے، اس طرح یوٹیلیٹی سیکٹر میں شفافیت اور احتساب کو برقرار رکھنے میں حکام کی مدد کرنا ہے۔

حکومت نے بدعنوانی کے خاتمے اور منصفانہ اور شفاف خدمات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے اپنے عزم کا اعادہ کیا ہے۔ اس نے بدعنوانی کے مرتکب افراد کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے اور یوٹیلیٹی کمپنیوں پر زور دیا ہے کہ وہ مستقبل میں ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے مضبوط اقدامات پر عمل درآمد کریں۔ حالیہ گرفتاریاں ان لوگوں کے لیے ایک انتباہ کے طور پر کام کرتی ہیں جو بدعنوانی میں ملوث ہیں، جو کہ عوامی خدمت کے اداروں میں احتساب اور سالمیت کو برقرار رکھنے کے حکومت کے عزم کا اشارہ ہے۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

اسلام آباد ہائی کورٹ نے توہین عدالت کیس میں فواد چوہدری کا جیل ٹرائل کالعدم قرار دے دیا

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کے حق میں فیصلہ سناتے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *