ن لیگ اور پیپلز پارٹی نے حکومت سازی کے لیے پاور شیئرنگ فارمولہ بنا لیا

وفاقی سطح پر حکمرانی قائم کرنے کی کوششوں میں پاکستان مسلم لیگ-نواز (پی ایم ایل-این) اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) نے 12 فروری کو ذرائع کی رپورٹ کے مطابق، پاور شیئرنگ کے لیے ایک فارمولا وضع کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کے قیام کے لیے مسلم لیگ ن، پیپلز پارٹی، ایم کیو ایم اور جے یو آئی ف پر مشتمل سیاسی اتحاد متوقع ہے۔ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے اپنی بات چیت کے دوران دو نکاتی فارمولے پر اتفاق کیا ہے۔

مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کے درمیان مذاکرات میں شامل ایک بااثر شخصیت نے انکشاف کیا ہے کہ پیپلز پارٹی آج اپنی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں اقتدار کی تقسیم میں شرکت کے حوالے سے کسی حتمی نتیجے پر پہنچ جائے گی۔

انکشاف شدہ فارمولے کے مطابق، پہلے مرحلے میں اکثریت والی پارٹی تین سال کے لیے وزیر اعظم کے عہدے پر فائز رہے گی، اس کے بعد دوسری سب سے بڑی جماعت دوسرے مرحلے میں دو سال کے لیے وزارت عظمیٰ کا عہدہ سنبھالے گی۔ مزید برآں، پیپلز پارٹی کی جانب سے پنجاب میں وزارت اعلیٰ کے عہدے کے لیے مریم نواز کی حمایت متوقع ہے۔

مزید برآں، پیپلز پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے آج ہونے والے اجلاس میں وفاقی حکومت کی پہلی یا دوسری مدت کے لیے فارمولے پر غور کیا جائے گا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ 8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات کے بعد حکومت سازی کے لیے سیاسی جوڑ توڑ میں تیزی آئی ہے، جس میں پارٹی کے بڑے رہنما اسلام آباد میں بلائے جا رہے ہیں۔

پیپلز پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس آج جاری ہے، مولانا فضل الرحمان سینٹرل ورکنگ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کریں گے جس میں مستقبل کے حالات پر غور کیا جائے گا۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

زلفی بخاری پی ٹی آئی چیئرمین کے مشیر برائے بین الاقوامی امور مقرر

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب کی جانب سے جاری کردہ باضابطہ نوٹیفکیشن …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *