اقتدار میں ہوں یا اپوزیشن میں، اب پی ٹی آئی اور جے یو آئی کا مؤقف یکساں رہے گا: شیرافضل

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما شیر افضل مروت نے کہا ہے کہ اقتدار میں ہوں یا اپوزیشن میں، پی ٹی آئی اور جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی-ف) کا موقف مستقل رہے گا۔ شیر افضل نے جے یو آئی ف کی پریس کانفرنس کے حوالے سے پی ٹی آئی کے بانی کے مثبت رویے پر اطمینان کا اظہار کیا۔

انہوں نے ذکر کیا کہ پی ٹی آئی کے بانی نے ایک ملاقات کے دوران اس بات پر زور دیا تھا کہ پریس کانفرنس میں مولانا فضل الرحمان کے نام کا ذکر ضروری تھا تاکہ پی ٹی آئی ان سے بات چیت پر آمادگی ظاہر کرے۔ شیر افضل نے عندیہ دیا کہ اب چاہے اقتدار میں ہوں یا اپوزیشن میں، پی ٹی آئی اور جے یو آئی (ف) کا موقف ایک جیسا رہ سکتا ہے۔

یاد رہے کہ پی ٹی آئی کے ایک وفد نے اسد قیصر کی قیادت میں مولانا فضل الرحمان کی رہائش گاہ کا دورہ کیا اور وزارت عظمیٰ کے لیے ان کے امیدوار عمر ایوب کی حمایت کی درخواست کی۔ ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے جے یو آئی (ف) کے رہنما حافظ حمد اللہ نے کہا کہ 8 فروری کے انتخابات میں دھاندلی ہوئی، دونوں جماعتیں اس بات پر متفق ہیں کہ انتخابات کو عوامی مینڈیٹ نہیں سمجھا جا سکتا۔ جے یو آئی ف نے 8 فروری کے انتخابات کو مسترد کر دیا۔

پی ٹی آئی رہنما بیرسٹر سیف کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کے بانی اسد قیصر کی رہنمائی میں پی ٹی آئی کے وفد نے مولانا فضل الرحمان سے انتہائی خوشگوار ماحول میں ملاقات کی۔ انہوں نے انتخابات میں عوامی مینڈیٹ کے ساتھ دھوکہ دہی پر تبادلہ خیال کیا اور مستقبل میں بھی اس ذہنیت کو جاری رکھنے پر اتفاق کیا، دوسری جماعتوں کے ساتھ بھی بات چیت میں مصروف رہیں۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ انتخابات کے نتائج قوم کی امانت میں خیانت ہے، جب تک چوری شدہ حقوق واپس نہیں مل جاتے وہ تحریک جاری رکھیں گے۔ قیادت کی جانب سے انہیں انتخابی دھاندلی پر تمام سیاسی جماعتوں سے مشاورت کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

اس سے قبل ایک نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے انکشاف کیا تھا کہ عمران خان کی حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد سابق آرمی چیف جنرل (ریٹائرڈ) باجوہ کی تجویز پر لائی گئی۔ مولانا نے واضح کیا کہ تحریک عدم اعتماد کے دوران جنرل (ریٹائرڈ) باجوہ اور لیفٹیننٹ جنرل (ریٹائرڈ) فیض حمید رابطے میں تھے، فیض حمید نے انہیں مشورہ دیا تھا کہ وہ سسٹم کے اندر جو کچھ کرنے کی ضرورت ہے وہ کریں۔ تاہم مولانا نے واضح کیا کہ وہ خود تحریک عدم اعتماد کے حق میں نہیں ہیں۔

About نشرح عروج

Nashra is a journalist with over 15 years of experience in the Pakistani news industry.

Check Also

زلفی بخاری پی ٹی آئی چیئرمین کے مشیر برائے بین الاقوامی امور مقرر

پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل عمر ایوب کی جانب سے جاری کردہ باضابطہ نوٹیفکیشن …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *